قومی سلامتی کمیٹی نے فاٹا کے خیبر پختونخواہ میں انضمام کی توثیق کردی

فوٹو، پی آئی ڈی

اسلام آباد: ( ویب ڈیسک) قومی سلامتی کمیٹی نے فاٹا کے خیبرپختونخوا میں انضمام کے فیصلے کی توثیق کردی۔

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی زیرصدارت قومی سلامتی کمیٹی کے بعد جاری اعلامیہ کے مطابق اجلاس میں ملکی داخلی اور خارجی سیکیورٹی صورتحال پر مشاورت، دہشت گردی کی حالیہ لہر اور کنٹرول لائن پر بھارتی جارحیت پر بھی بات چیت کی گئی۔

قومی سلامتی کمیٹی نے فلسطین اور کشمیر پر پاکستان کے اصولی موقف پر اطمینان کا اظہار کیا۔

کمیٹی کوآزاد کشمیر اور گلگت بلتستان میں اصلاحاتی تجاویز پر بریفنگ دی گئی، اجلاس میں فاٹا کے خیبرپختونخوا میں انضمام کے معاملے پر بھی غور کیا گیا۔ وزیراعظم نے شرکاء کو فاٹا اصلاحات پر پارلیمانی رہنماوٴں سے ملاقات پر بریف کیا ۔

وزیراعظم نے کمیٹی کو بتایا کہ اکثر سیاسی جماعتوں کا فاٹا کے خیبرپختونخوا میں انضمام پر اتفاق رائے ہے جس پرقومی سلامتی کمیٹی نے فاٹا کے خیبرپختونخوا میں انضمام کے فیصلے کی توثیق کی۔

اجلاس میں آز ادکشمیر اور گلگت بلتستان کو مزید مالی و انتظامی اختیارات دینے پر اتفاق ہوا جب کہ گلگت بلتستان کو 5 سالہ ٹیکس چھوٹ دینے پر بھی اتفاق کر لیاگیا۔

فیصلہ کیاگیا کہ آئندہ 10 سال میں فاٹا کو بھی اضافی ترقیاتی فنڈز مہیا کیے جائیں گے۔ فاٹا کے مختص فنڈز صوبے کے کسی اور علاقے میں استعمال نہیں کئے جائیں گے۔

کمیٹی نے وزارت داخلہ کو سیاحوں اور تاجروں کیلئے ویزے کا عمل آسان بنانے کیلئے تجاویز کا ازسر نو جائزہ لیکر آئندہ اجلاس میں دوبارہ پیش کرنے کی ہدایت کی۔

سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے علاوہ تینوں مسلح افواج کے سربراہان، وزیرداخلہ احسن اقبال، وزیرخارجہ و دفاع خرم دستگیر کے علاوہ دیگر وزراء بھی شریک ہوئے۔

1Shares

Comments are closed.