پاکستان ہمارے ساتھ کھڑا ہے،اسکی تشویش جائزہے دور کرینگے، ذبیح اللہ

طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے کابل میں پریس کانفرنس

کابل( زمینی حقائق ڈاٹ کام)ترجمان طالبان نے کہاہے ہمسایہ ہونے کے ناطے مختلف معاملات پر پاکستان کی تشویش جائز ہے ، جن معاملات پر پاکستان کو تشویش ہے انہیں حل کریں گے جب کہ ہماری سرزمین پاکستان کے خلاف استعمال نہیں ہوگی۔

ان خیالات کااظہار طالبان ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے کابل میں پریس کانفرنس میں کیا ،انھوں نے واضح کیاکہ پاکستانی وفد افغانستان میں امن و امان سے متعلق بات چیت کے لیے آیا تھا، پاکستانی وفد نے ہم سے سیکیورٹی اور دیگر معاملات پر بات کی، پاکستان سے درخواست ہے۔

ذبیح اللہ مجاہد نے کہا ہم نے پاکستانی حکام سے کہا ہے کہ وہ افغانوں کے لیے سرحدوں کے دروازے کھلے رکھے جب کہ پاکستان افغانستان کے ساتھ کھڑا ہے جس پر ان کے شکرگزار ہیں۔

پنجیشر کی مزاحمت ختم کرکے طالبان نے پورے افغانستان کا کنٹرول حاصل کرلیاہے ، ہم لڑنے کی حامی نہیں تھے لیکن مزاحمت کرنے والوں نے مزاکرات میں حل نکالنے کی بجائے یہ راستہ چنا ۔

 ان کا کہنا تھا ہم چاہ رہے تھے کہ پنجشیر میں بات چیت سے معاملات طے پا جائیں لیکن افسوس ہے کہ ایسا نہ ہو سکا، لڑائی کے بعد دشمن کے آخری ٹھکانے پر بھی قبضہ کر لیا ہے۔

ذبیح اللہ مجاہد نے بتایا کہ این آر اے ایف کے متعدد کمانڈرز اور جنگجو جھڑپوں میں مارے گئے اور کئی فرار ہو گئے ہیں اورطالبان نے ایک بار پھر افغانستان کے ناقابل تسخیرسمجھے جانے والے صوبے پنجشیر کا مکمل کنٹرول حاصل کر لیاہے ۔

http://

ترجمان طالبان نے کہا وادی پنجشیر کے عوام ہمارے بھائی ہیں، کسی کے خلاف کوئی انتقامی کارروائی نہیں کی جائے گی، سب مل کر ملکی ترقی اور خوشحالی کے لیے کام کریں گے، افغانستان کے دیگر حصوں کی طرح پنجشیر میں بھی خوظ اسلوبی سے معاملات چلیں گے۔

انھوں نے کہا کہ پنجشیر کے عوام بالکل پریشان نہ ہوں، سب کے لیے عام معافی ہے،کسی کے خلاف کوئی انتقامی کارروائی نہیں ہوگی،انھوں نے کہا کہ ہم ملک میں امن و استحکام دیکھنا چاہتے ہیں، مزاحمت کااعلان نہ ہوتا تو شاید کاروائی نہ کرتے۔

ذبیح اللہ مجاہد نے یقین دہانی کرائی ہے کہ پاکستان سمیت دوسرے کسی ملک کے خلاف افغانستان کی سرزمین دہشت گردی کے لیے استعمال نہیں ہونے دیں گےعالمی برادری سے اچھے تعلقات کے خواہاں ہیں۔

دوسری طرف قومی مزاحمتی محاذ افغانستان نے طالبان کے وادی پنجشیر پر مکمل کنٹرول کے دعوے کی تردید کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ مزاحمتی فورسز لڑائی جاری رکھنے کے لیے وادی کی تمام اسٹریٹجک پوزیشنوں پر موجود ہیں۔

ترجمان مزاحمتی اتحاد علی میثم نظارے نے اپنے ایک بیان میں بتایا کہ احمد مسعود محفوظ ہیں، وہ جلد پیغام جاری کریں گے،افغان میڈیا رپورٹس کے مطابق پنجشیر میں مزاحمتی محاذ کے ترجمان فہیم دشتی اور عبدالودود زرہ سمیت پانچ اہم کمانڈر گزشتہ روز طالبان سے جھڑپوں میں مارے گئے۔

سوشل میڈیا پر وائرل تصاویر میں طالبان کمانڈرز کو وادی پنجشیر کے گورنر ہاؤس میں کھڑے دیکھا جا سکتا ہے لیکن اس کے باوجود مزاحمتی فورس کے سربراہ احمد مسعود کا اس حوالے سے کوئی بیان سامنے نہیں آیا ہے۔

0Shares

Comments are closed.