خیبرپختونخوا کے اضلاع میں آتشزدگی، خواتین سمیت 4 افراد جاں بحق

فوٹو : عمر باچا

شانگلہ(زمینی حقائق ڈاٹ کام)خیبرپختونخوا کے اضلاع میں آتشزدگی، خواتین سمیت 4 افراد جاں بحق ہو گئے، ضلع شانگلہ کی تحصیل چکیسر کے جنگلات میں آتشزدگی، خواتین سمیت 3 افراد جاں بحق ہوئے.

آگ مضافاتی علاقے کپرائی کی پہاڑی پر لگی ہے ادھر سوات میں کبل کے علاقے سیگرام، تحصیل بری کوٹ کےعلاقے ابالا، چارباغ کے علاقے کوٹ، مانسہرہ اور پٹھانے سمیت ملحقہ علاقوں کے پہاڑی علاقے میں لگی آگ بجھانے کی کوششیں جاری ہیں۔

اس کے علاوہ لوئر دیر کے پہاڑوں کےجنگلات میں بھی آگ بھڑک اٹھی ہے جسے بجھانے کے لیے انتظامیہ،مقامی افراد اور پاک فوج کے جوان مصروف عمل ہیں

ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی کے ضلعی ترجمان کا کہنا ہے انعام اللہ خان کے مطابق ریسکیو 1122 کی ٹیم اور ریونیو کا عملہ جائے وقوع پر پہنچ چکا ہے جبکہ دیگر ٹیمیں راستے ہیں۔

ڈی ڈی ایم شانگلہ کا کہنا ہے کہ آتشزدگی کے واقعے میں 41 سالہ خیرالنسا، 19 سالہ رضوانہ بی بی، اور 21 سالہ خالدالرحمٰن جاں بحق ہوئے ہیں جبکہ نذرانہ بی بی زخمی ہیں، تمام افراد کا تعلق ایک ہی خاندان سے تھا۔

انعام اللہ کا کہنا تھا کہ فاریسٹ ریونیو اور ریسکیو 1122 کی ٹیمیں آتشزدگی پر قابو پانے کی کوشش کر رہی ہیں، آگ جھاڑیوں میں لگی تھی جس نے دیکھتے ہی دیکھتے پورے علاقے کو لپیٹ میں لے لیا۔

ڈپٹی کمشنر شانگلہ ضیا الرحمٰن نے میڈیا کو بتایا کہ انہوں نے عملے کو جائے وقوع پہنچنے کی ہدایت کی ہے اور کہا ہے کہ متاثرین کی مدد کریں جبکہ ریسکیو 1122 اور جنگلات سے متعلق محکمے کے افراد کو بھی ہدایت کی گئی۔

آتشزدگی سے متاثر علاقہ بلندی پر واقع ہے اور یہاں رسائی ممکن نہیں ہے، یہاں کوئی سڑک نہیں ہے جس کے ذریعے جائے وقوعہ پر پہنچا جاسکے جس کی وجہ سے ریسکیو ٹیموں کو آگ پر قابو پانے میں مشکلات کا سامنا ہے۔

محکمہ جنگلات کے عہدیدار کے مطابق یہ معلوم کرنا ہوگا کہ علی جان کے مقامات پر آگ لگانے والوں کے بارے میں معلومات حاصل کی جائے گی، ابتدائی طور یہ معلوم کرنا ناممکن ہے۔

0Shares

Comments are closed.