سیاسی جماعتوں کا تصادم روکنے کیلئے سپریم کورٹ میں آئینی درخواست دائر

فوٹو: فائل

اسلام آباد( زمینی حقائق ڈاٹ کام )سیاسی جماعتوں کا تصادم روکنے کیلئے سپریم کورٹ میں آئینی درخواست دائر کردی گئی، تحریک عدم اعتماد کے معاملے پر تصادم کا خطرہ ظاہر کیاگیاہے۔

عدالت اعظمیٰ میں یہ آئینی درخواست سپریم کورٹ بار کی طرف سے دائر کی گئی جس میں وزیراعظم پاکستان عمران خان،اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر اور قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہبازشریف کو بھی فریق بنایا گیا۔

آئین کے آرٹیکل 184(3) کے تحت دائر کی گئی آئینی درخواست میں وزارت داخلہ،دفاع،آئی جی اسلام آباد،ڈپٹی کمشنر اسلام آباد کو بھی فریق بنایا گیا۔

سپریم کورٹ میں دائر کردہ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ عدم اعتماد کا عمل پرامن انداز سے مکمل ہو، عدم اعتماد آرٹیکل 95 کے تحت کسی بھی وزیراعظم کو ہٹانے کا آئینی راستہ ہے۔

درخواست میں کہا گیا کہ سیاسی بیانات سیعدم اعتماد کے روز فریقین کے درمیان تصادم کا خطرہ ہے، سپریم کورٹ تمام اسٹیک ہولڈرز کوعدم اعتماد کا عمل پرامن انداز سے مکمل ہونے کا حکم دے۔

عدالت سے استدعاکی گئی ہے کہ سپریم کورٹ تمام ریاستی حکام کوآئینی حدود میں رہنے اور اسپیکر قومی اسمبلی کو وزیراعظم کے خلاف تحریک عدم اعتماد میں اپنی آئینی ذمہ داریاں پوری کرنے کا حکم دے۔

آئینی درخواست میں وفاقی دارالحکومت میں امن و امان کی صورتحال برقرار رکھنے کا حکم دینے کی بھی استدعا کی گئی ہے۔

0Shares

Comments are closed.