مقبوضہ کشمیر میں45 لاکھ بھارتیوں کو کشمیری ڈومیسائل دیئے گئے

اسلام آباد( زمینی حقائق ڈاٹ کام)مقبوضہ کشمیر کے حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشال ملک نے انکشاف کیاہے کہ مقبوضہ کشمیر میں45 لاکھ بھارتیوں کو کشمیری ڈومیسائل دیئے گئے۔

مشال ملک جو کہ چیئرپرسن پیس اینڈ کلچر آرگنائزیشن بھی ہیں نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی تسلط اور صورتحال کے حوالے سے نیشنل پریس کلب اسلام آباد میں مظاہرین سے خطاب میں اقوام متحدہ سے مطالبہ کیا کہ وہ اپنی قراردادوں کے مطابق مسلہ کشمیر کے حل کی راہ نکالے۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کے خلاف نیشنل پریس کلب کے باہر احتجاج کے دوران خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ 70 سال ہوگئے کشمیریوں کو ان کی شناخت نہیں ملی۔

مشال ملک نے کہا ہے کہ اگر بھارت اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عمل نہیں کررہا تو پھر دنیا کو بھارت پر پابندیاں لگانی چاہئیں، صرف مذمت سے کام نہیں چلے گا۔

http://

جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے سربراہ حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشال ملک کا کہنا تھا کہ حق خودارادیت نہیں مل رہا جبکہ کشمیریوں کا قتل عام کیا جارہا ہے، کشمیریوں کو اب جبری لاپتہ بھی کیا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کو اجازت نہیں کہ وہ اپنے پیاروں کی میتیں دفنا سکیں، کشمیری اپنے شہداء کی قبروں پر فاتحہ خوانی کے لیے نہیں جاسکتے، مشال ملک نے یہ بھی کہا کہ یاسین ملک کی صحت کا کچھ پتہ نہیں۔

مشال ملک نے خطاب کے دوران کہا کہ ایک سال کے اندر 400 کشمیریوں کو شہید کیا گیا ہے، دنیا کو بھارت پر پابندیاں لگانی چاہئیں کیونکہ بھارتی مظالم کا سلسلہ ختم ہونے کانام نہیں لے رہا۔

کورونا وائرس کے حوالے سے مشال ملک نے کہا کہ کشمیر میں کورونا کی نئی لہر پھیل رہی ہے، کوئی پرسان حال نہیں،انہوں نے بتایا کہ 45 لاکھ بھارتیوں کو کشمیری ڈومیسائل جاری کیے گئے ہیں۔

انھوں نے عالمی برادری اور بالخصوص اسلامی ممالک کے سربراہان مملکت سے مطالبہ کیا کہ وہ مصلحت کا شکار نہ ہوں بلکہ بھارت کو باور کرائیں کہ وہ جو مقبوضہ کشمیر میں کررہاہے وہ عمل درست نہیں ہے۔

0Shares

Comments are closed.