خواتین کو روک کر ویڈیوز بنانے والا یو ٹیوبر گرفتار


گوجرانوالہ ( ویب ڈیسک) پولیس نے راستے میں روک کر خواتین کی ویڈیو بنانے اور انھیں ہراساں کرنے والے یو ٹیوبر خان علی کو گرفتار کرلیاہے۔

رپورٹ کے مطابق گوجرانوالہ میں پولیس نے پرینک (مذاق) کے نام پر خواتین کو ہراساں کرنے والے جس یوٹیوبر کو گرفتار کیاہے اس کا’ویلے لوگ خان علی’ کے نام سے یوٹیوب چینل ہے جس کے 3 لاکھ 23 ہزار سبسکرائبرز ہیں۔

پولیس نے سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی ‘پرینک’ ویڈیوز میں خواتین کو ہراساں اور پریشان کرنے پر کارروائی کی اور خاص کر سوشل میڈیا پر ویڈیوز چلنے کے بعد صارفین نے بڑی تعداد میں گرفتاری کا مطالبہ بھی کیا تھا۔

خان علی کی یو ٹیوب ویڈیوز میں خواتین کو سرے راہ چلتے ، پارکوں میں جا کر خواتین کو ہراساں کرتے ہوئے دیکھا جاسکتاہے وہ خواتین سے کہتاہے کہ آپ لازمی طور پر اپنی والدہ، بہنوں اور بیٹیوں کو سر پر دوپٹہ اوڑھنے کا کہیں، یہ ایک پرینک نہیں، ایک پیغام ہے۔

ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ وہ راہ چلتی خواتین کو روک کر انہیں دوپٹہ لینے کا کہتا ہے اور یہاں تک کہ اس کے بدلے انہیں پیسے دینے کا بھی پیشکش کرتاہے اسی کام کے دوران اسے کئی خواتین نے تھپڑ بھی رسید کئے۔

بیرون ملک مقیم پاکستان کے سینئر صحافی ثاقب راجہ نے بھی اس یوٹیوبر کی ویڈیوز اور خاص کر خواتین کو روکنے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ شخص شہروں میں آزاد کیوں گھوم رہا ہے.

کبھی یہ اسکول، کالج کی بچیوں کے بازو پکڑ لیتا ہے، کبھی بچیوں کے سر سے دوپٹہ کھینچ لیتا ہے۔
کوئی قانون ہے پاکستان میں ؟ یہ مذاق ہے؟

لوگوں کے مطالبے پر ایس پی صدر عبدالوہاب کی زیر نگرانی تھانہ گکھڑ منڈی پولیس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے پرینک ویڈیو کے نام پر خواتین کی تذلیل کرنے والے ملزم کو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا۔

0Shares

Comments are closed.