فواد چوہدری اور فردوس عاشق کو جج کی قبر پر جا کر معافی مانگنے کاحکم

فوٹو: فائل

پشاور( زمینی حقائق ڈاٹ کام)وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری اور فردوس عاشق کو جج کی قبر پر جا کر معافی مانگنے کاحکم، پشاور ہائی کورٹ نے غیر مشروط معافی مانگنے پر دونوں کو تحریری حلف نامہ جمع کرانے کا حکم دیا۔

ہائیکورٹ نے سابق صدر پرویز مشرف کو پھانسی کی سزا سنانے والے خصوصی عدالت کے جج وقار سیٹھ کے خلاف وفاقی وزراء کی پریس کانفرنس پر توہین عدالت کی درخواست پر سماعت کی۔

خصوصی عدالت کے جج وقار سیٹھ نے پرویز مشرف کے خلاف فیصلہ سنایا تھا جس کے خلاف ہرزہ سرائی پر توہین عدالت کیس میں وفاقی وزیر فواد چوہدری اور فردوس عاشق اعوان نے پشاور ہائی کورٹ پیش ہو کرعدالت سے غیر مشروط معافی مانگ لی۔

سماعت کے دوران جسٹس روح الامین نے ریمارکس دیئے کہ جس جج صاحب کی دل آزاری کی ہے ان کی قبر پر جاکر دعا کریں اور معافی مانگیں، اللہ تعالی بھی عفو درگزر کو پسند کرتا ہے لیکن جس بندہ کی آزاری کی ہو اس سے معافی مانگنا ضروری ہے۔

جسٹس روح الامین نے کہا آپ ان کے قبر پر جائیں ان سے معافی مانگیں پھر ہمارے پاس آجائیں، آپ ذمہ دار لوگ ہیں، اگر اس طرح کی زبان استعمال کریں گے تو عام آدمی کیا کرے گے۔

پشاور ہائی کورٹ نے فواد چوہدری اور فردوس عاشق اعوان کو تحریری حلف نامہ جمع کرانے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ آپ حلف نامہ جمع کرائیں پھر ہم آرڈر کریں گے۔

توہین عدالت کے اسی کیس میں وفاقی وزیرقانون فروغ نسیم، سابق معاون خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر اور سابق اٹارنی جنرل انور منصور پہلے ہی عدالت میں پیش ہوکر معافی مانگ چکے ہیں۔

0Shares

Comments are closed.