کرکٹر یاسر شاہ کی لڑکی سے زیادتی پر کرکٹ بورڈ کا موقف

لاہور(زمینی حقائق ڈاٹ کام)کرکٹر یاسر شاہ کی لڑکی سے زیادتی پر کرکٹ بورڈ کا موقف سامنے آگیا ہے یاسر شاہ پر 14 سالہ لڑکی سے زیادتی میں معاونت کا الزام عائد کرنے کا مقدمہ درج کیا گیا ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے حکام کے مطابق فی الحال اس حوالے سے معلومات اکٹھی کررہے ہیں، مکمل حقائق سامنے آنے تک اس پر کوئی تبصرہ نہیں کیا جائے گا۔

پی سی بی حکام کے مطابق یہ بات ہمارے علم میں آئی ہے کہ سینٹرل کانٹریکٹ یافتہ ایک کھلاڑی پر الزامات عائد کیے گئے ہیں تاہم تفصیلات موصول نہیں ہوئیں۔

ٹیسٹ کرکٹر یاسر شاہ کےخلاف اسلام آباد کے تھانہ شالیمار میں لڑکی نے ہراسانی اور زیادتی میں معاونت کے الزامات کے تحت مقدمہ درج کرایا ہے۔

ایف آئی آر کے مطابق خاتون نے ایف آئی آر میں الزام لگایا کہ یاسر شاہ کے دوست فرحان نے گن پوائنٹ پر زیادتی کی، ویڈیو بھی بنائی اور ہراساں کیا۔

ایف آئی آر میں متاثرہ لڑکی نے کہا کہ یاسر شاہ اور فرحان نے اسے ویڈیو وائرل کرنے، جان سے مارنے یا مقدمے میں پھنسانے کی دھمکی دی۔

متاثرہ لڑکی نے کہا کہ واٹس ایپ پر یاسر شاہ کو سارے معاملے کا بتایا تو اس نے مذاق اڑایا، ساتھ ہی سنگین نتائج کی دھمکیاں دیں اور کہا وہ بہت با اثر ہے، اعلیٰ افسران سے دوستی ہے۔

ایف آئی آر کے مطابق پولیس کو اطلاع دی تو قومی کرکٹر نے فلیٹ اور 18 سال تک اخراجات اٹھانے کی پیشکش کی ہے، پولیس نے تحقیقات شروع کردی ہیں۔

خاتون نے الزام عائد کیا ہے کہ یاسرشاہ کے دوست فرحان نےگن پوائنٹ پرزیادتی، ویڈیو بھی بنائی اورہراساں کیا، فرحان اوریاسر شاہ نےدھمکی دی کہ کسی کوبتایا تو ویڈیو وائرل کردوں گااورجان سے بھی ماردیں گے.

0Shares

Comments are closed.