طیارہ کیوں بنایا؟ پاکپتن میں نوجوان انجینئر گرفتار،مقدمہ درج

پاکپتن(ویب ڈیسک) پنجاب کے ضلع پاکپتن میں نوجوان محنت کش کو منی طیارہ بنانا مہنگا پڑ گیا، پولیس نے محنت کش کو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا۔

پاکپتن کے علاقے تھانہ رنگشاہ پولیس نے منی طیارہ بنانے والے نوجوان فیاض کو گرفتار کرکے سنگین دفعات کے تحت مقدمہ درج کرکے عدالت میں پیش کردیا۔

نوجوان فیاض کا کہنا ہے کہ جہاز بنانے کے لیے ایک ایکڑ زمین بیچ دی تھی، طیارہ بنانے پر داد دینے کے بجائے ہتھکڑیاں لگادی گئیں حکومت نوٹس لے۔

فیاض کی گرفتاری پر والدہ نے وزیراعظم سے رہائی کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ اس کے چھوٹے بچے پریشان ہیں، بیٹے کو رہا کیا جائے۔

نوجوان کے خلاف درج ایف آئی آر میں کہا گیا ہے کہ طیارہ بغیر پرمٹ کے بنایا گیا جبکہ اس سلسلے میں حکومتی اجازت نامہ بھی نہیں ہے، نوجوان نے جہاز پر کرتب بھی دکھائے پولیس پہنچی تو جہاز لینڈ کررہا تھا۔

پاکپتن کی عدالت نے جہاز بنانے والے نوجوان کو تین ہزار روپے جرمانہ کرکے چھوڑنے کا حکم جاری کردیا، تھانہ رنگشاہ پولیس نے نوجوان فیاض کو ریمانڈ کے لیے عدالت میں پیش کیا تھا۔

واضح رہے کہ گزشتہ سال ستمبر میں پشاور کے نوجوان نے بجلی سے چلنے والی موٹر سائیکل متعارف کرائی تھی۔

انجینئر شہر یار خان کا کہنا تھا کہ بائیک بنانے کا مقصد ماحول کو آلودگی سے بچانا ہے، یہ موٹر بائیک تین گھنٹے میں مکمل چارج ہو کر 102 کلو میٹر سفر طے کرتی ہے۔

6Shares

Comments are closed.