بھارت نے کرتارپورپر2 اپریل کی طے شدہ ملاقات موخر کر دی

فائل فوٹو

اسلام آباد(زمینی حقائق )بھارتی ہٹ دھرمی نے ایک بار پھر سکھوں کوانتظار کی سولی پر لٹکا دیا،  بھارت کی طرف سے کرتارپور راہداری پر 2 اپریل کو طے شدہ ملاقات مؤخر کردی گہی۔

ترجمان دفترِ خارجہ ڈاکٹر فیصل نے ٹوئٹر کے ذریعے بھارت کی جانب سے میٹنگ مؤخر کیے جانے کی تصدیق کی اور بھارت کی جانب سے مذاکرات مؤخر کیے جانے کے فیصلے پر افسوس ہوا۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ 14 مارچ کو کرتاپور راہداری کے حوالے سے ہونے والے مذاکرات میں دونوں طرف سے آئندہ میٹنگ پر  بلانے پر اتفاق ہوا تھا، ان مذاکرات میں تصفیہ طلب مسائل اور ان کے حل پر گفتگو کی گئی تھی۔

ڈاکٹر فیصل نے مزید کہا کہ پاکستان کا مؤقف جانے بغیر آخری لمحات اور بالخصوص 19 مارچ کو ایک مثبت تکنیکی مذاکرات کے بعد میٹنگ مؤخر کرنا ناقابلِ فہم ہے۔

بھارت کی جانب سے میٹنگ مؤخر کیے جانے سے قبل ڈاکٹر فیصل نے بھارتی میڈیا کو میٹنگ کی کوریج کی اجازت بھی دے دی تھی۔

یاد رہے کہ پاکستان نے کرتارپور راہداری پر قدم اٹھایا تھا جب کہ وزیراعظم عمران خان نے راہداری کا افتتاح کیا۔پاکستان نے نجوت سدھو کے زریعے یہ لانگا کھولنے کا قدم اٹھایا بھارت قدم قدم پر رکاوٹیں کھڑی کرنے میں مصروف ہے۔

3Shares

Comments are closed.