حکومت مخالف احتجاج کی دوسری کال سپریم کورٹ کے فیصلہ سے مشروط

پشاور(زمینی حقائق ڈاٹ کام) چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے حکومت مخالف احتجاج کی دوسری کال سپریم کورٹ کے فیصلہ سے مشروط کردی.

سوشل میڈیا کانفرنس میں عمران خان کا کہنا تھا حکومت کی کوشش ہے لوگوں کو احتجاج سے روکنے کےلئے ڈرائے دھمکائے گولیاں برسائے.

انھوں نے کہا کہا مقصد صرف خوف پھیلانا ہے ، انھوں نے کہا کہ یہ صرف اس لئے ہے کہ ہم پر تیس سال جرم کرنے والے لوگ مسلط ہو گئے ہیں، رانا ثنا اللہ نے لاہور میں چودہ افراد کا قتل کیا۔

انھوں نے کہا کہ دیکھتے ہیں عدالت کا فیصلہ آجائے۔ کیونکہ عدالتیں کمزور افراد کو تحفظ اور انصاف دینے کےلئے بنتی ہیں،، اس بار ہم تیاری کرکے جائیں گے اور پچھلی غلطیاں نہیں دہرائیں گے۔

عمران خان نے کہا کہ ملک کے لیے فیصلہ کن وقت ہے اور انصاف کی جنگ ہے، اس جدوجہد کوسیاست نہیں،جہاد سمجھیں، حکومت کوشش کررہی ہے لوگوں کو ڈرائے دھمکائے، لوگوں پر گولیاں برسانے کا مقصد خوف پھیلانا تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ جو شیلز دہشت گردوں پر استعمال کیے جاتے ہیں، وہی مارچ میں استعمال ہوئے،عمران خان کا کہنا تھا کہ 30 سال سے جرم کرنے والے آج اوپر آکر بیٹھ گئے ہیں ، شہباز شریف،رانا ثناءاللہ نے دن دیہاڑے 14لوگوں کا قتل کیا۔

ماڈل ٹاؤن میں 14قتل ہوئے ان لوگوں کو اس وقت جیل میں ہونا چاہیے، لٹیروں اور قاتلوں کو شکست دے دی تو پاکستان اوپر چلا جائے گا۔آج سپریم کورٹ میں ہم نے درخواست دائر کردی ہے۔

چیئرمین تحریک انصاف نے کہا کہ سپریم کورٹ سے تحفظ چاہتے ہیں کہ کیا ہمیں پرامن احتجاج کا حق حاصل ہے اور کیا عدلیہ ان مجرموں کو خواتین اور بچوں پر تشدد کی اجازت دے سکتی ہے، سپریم کورٹ کا فیصلہ آنے کے بعد ہی اعلان کروں گا اور پھر ہم نکلیں گے۔

0Shares

Comments are closed.