ایران سے آنے والے ناقص تیل کے12ٹینکرز طالبان حکام نے واپس بھجوا دیئے

فوٹو: فائل

نمروز(ویب ڈیسک)ایران سے آنے والے ناقص تیل کے12ٹینکرز طالبان حکام نے واپس بھجوا دیئے،طالبان نے خراب کوالٹی کا تیل افغانستان میں لانے پر 12 ایرانی آئل ٹینکرز کو ملک میں داخل ہونے دیا۔

اس حوالے سے افغان میڈیا کی رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ طالبان کے سکیورٹی حکام کا حوالہ دے کر بتایا کہ ایران سے درآمد کیے گئے تیل کے 12 ٹرکوں میں غیر معیاری تیل موجود پایا گیا اس لئے انہیں واپس ایران بھیج دیا گیا۔

صوبہ نمروز کے طالبان گورنر، صوبائی پولیس چیف، نیشنل ڈائریکٹوریٹ آف سیکورٹی کے نمائندے، کسٹمز اور محکمہ نارم اینڈ سٹینڈرڈ کے حکام کی موجودگی میں طالبان چیف آف پولیس آفس میں کرائم کنٹرول کے ڈائریکٹر قاری عبدالرحیم حذیفہ نے تفصیلات بتائیں۔

ان کا کہنا تھا کہ نارم اینڈ اسٹینڈرڈ ڈپارٹمنٹ کی لیبارٹری میں جانچ کے بعد ایران سے درآمد کیے گئے 500,000 لیٹر آئل کے 12 ٹینکروں میں خراب کوالٹی کا تیل پایا گیا جس کے بعد ٹینکروں کو واپس ایران بھیج دیا گیا۔

طالبان کے نائب وزیر اعظم ملا عبدالغنی برادر کی زیر صدارت اقتصادی کمیشن کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا تھا کہ مذکورہ بالا ٹیم خراب کوالٹی کے پیٹرولیم اور گیس مصنوعات کی نشاندہی کرنے اور ان کی درآمد پر پابندی عائد کرنے کی ذمہ دار ہوگی۔

صوبہ نمروز کے متعدد مقامی لوگوں نے طالبان کے اس اقدام کو سراہا ہے اور کہا ہے کہ ناقص معیار کا تیل فضائی آلودگی میں معاون اور شہریوں کیلئے سنگین مسائل کا باعث بن رہا ہے۔

واضح رہے کہ ایرانی تیل کی ایک بڑی کھیپ بلوچستان کے راستے پاکستان پہنچتی ہے ، تاہم ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ تیل غیر قانونی طور پر مقامی سمگلرز بلوچستان میں لاتے ہیں ۔

0Shares

Comments are closed.