پنجاب اسمبلی اجلاس سے قبل ڈی جی اسمبلی پارلیمانی امور گرفتار، سیکرٹری کے گھر چھاپہ

لاہور( زمینی حقائق ڈاٹ کام)پنجاب اسمبلی اجلاس سے قبل ڈی جی اسمبلی پارلیمانی امور گرفتار، سیکرٹری کے گھر چھاپہ ، اسمبلی کے اطراف سڑکوں پر سخت چیکنگ،متعدد اسمبلی ملازمین کو بھی اندر جانے کی اجازت نہ ملی۔

پنجاب اسمبلی کے ڈی جی پارلیمانی امور رائے ممتاز کو پولیس نے ان کے گھر سے گرفتار کیا ،ترجمان پنجاب اسمبلی کے مطابق پولیس دیواریں پھلانگ کر رائے ممتاز کے گھر کے اندر داخل ہوئی جبکہ سیکریٹری اسمبلی محمد خان بھٹی اور سیکریٹری کوارڈینیشن عنایت اللہ لک کے گھر پر بھی چھاپہ مارا گیا۔

اس دوران پولیس کی جانب سے اہل خانہ کو ہراساں کیا گیا پولیس ایکشن کی ویڈیوز بھی سامنے آگئی ہیں،پنجاب اسمبلی کے ترجمان کے مطابق سیکرٹری اسمبلی محمد خان بھٹی اور سیکرٹری کوآرڈینیشن عنایت اللہ لک کے گھر پر بھی چھاپے مارے گئے۔

پنجاب اسمبلی کی عمارت کو پولیس نے گھیرے میں لے لیا اور گیٹ نمبر ایک کے دروازے بند کر دیے گئے ہیں جبکہ صوبائی اسمبلی کی عمارت میں ملازمین کو اندر جانے کی اجازت نہیں دی جا رہی ہے۔ پنجاب اسمبلی کی دیواروں پر خار دار تاریں لگائی گئیں۔

پنجاب اسمبلی میں آج اراکین اسمبلی اجلاس میں شرکت کے لیے آرہے ہیں ، اجلاس سے قبل مین سڑک کی صفائی بھی کی جا رہی ہے جبکہ پانی کا چھڑکاو بھی کیا گیا۔ ریسکیو ڈبل ون ٹو کی ہائیڈروک کرین بھی طلب کرلی گئی ہے۔

پنجاب اسمبلی کے اسپیکر پرویز الٰہی نے رائے ممتاز کی گرفتاری اور محمد خان بھٹی اور عنایت اللہ کے گھروں پر چھاپوں کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ سب ایکشن شہباز شریف کے حکم پر ہو رہا ہے، حکومت ایکشن فسطائیت ہے۔

پرویز الہٰی نے رائے ممتاز کو گرفتار کرنے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب اسمبلی کے سینئر آفیسرز کی گرفتاری اور چھاپے حکومت کی بوکھلاہٹ کا ثبوت ہے۔

اسپیکر پنجاب اسمبلی اور رہنما مسلم لیگ ق چوہدری پرویز الٰہی نے کہا کہ غیر آئینی اور جعلی حکومت آئین اور قانون کے خلاف اقدامات کر رہی ہے، شریفوں کا چہرہ قوم کے سامنے آرہا ہے۔

0Shares

Comments are closed.