دھمکی آمیز خط پر حکومتی نہیں عدالتی کمیشن بنایا جائے، تحریک انصاف

اسلام آباد(زمینی حقائق ڈاٹ کام) دھمکی آمیز خط پر حکومتی نہیں عدالتی کمیشن بنایا جائے، تحریک انصاف نے حکومت کے کمیشن قائم کرنے کے اعلان کو مسترد کردیا ہے.

اسلام آباد میں تحریک انصاف کے رہنماؤں فواد چوہدری اور فرخ حبیب نے پریس کانفرنس میں کہا کہ تحریک انصاف حکومت کے ماتحت کمیشن بنانے کے فیصلے کو مسترد کرتی ہے.

انھوں نے واضح کیا کہ تحریک انصاف صرف ایک ہی کمیشن کو تسلیم کرے گی جو کہ آزاد عدلیہ کے ماتحت ہو اور اس کی کھلی سماعت ہو، حکومت کے کمیشن کی کوئی اہمیت نہیں ہے.

فواد چوہدری نے کہا کہ مریم اورنگزیب پریس کانفرنس کرتے ہوئے بہت گھبرائی ہوئی تھیں، مریم اورنگزیب آپ نے گھبرانا نہیں ہے، آپ اتنی غصے میں کیوں ہوتی ہیں؟ آپ کے گھبرانے کا وقت کل کے جلسے کے بعد شروع ہوگا۔

فواد چوہدری نے کہا کہ فرح پر الزام کوئی نہیں ہے اور اس کے خلاف پریس کانفرنس روزانہ ہورہی ہے، حکومت کو عمران خان کے خلاف کچھ مل نہیں رہا اس لیے ایسے اقدامات اٹھائے جارہے ہیں، اگر فرح خان نے کرپشن کی ہے تو اس پر کیسز کیوں نہیں بنائے جارہے؟

سابق وزیر اطلاعات نے کہا کہ حکومت کے دو تہائی وزیر ضمانتوں پر ہیں، جب سے یہ حکومت آئی ہے دہشت گردی کے واقعات میں 24 فیصد اضافہ ہوا ہے، ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کا سب سے اہم مسئلہ توانائی بحران ہے.

فواد چوہدری نے کہا ملک تین ہفتے سےتوانائی کا کوئی وزیر نہیں، وزارتوں کی بندربانٹ کی وجہ سے ملک کرائسزز میں ہے، اور توانائی بحران پر توجہ کی بجائے دن رات تحریک انصاف پہ توانائی خرچ کر رہے ہیں.

سابق وزیر مملکت برائے اطلاعات فرخ حبیب نے کہا کہ عدالتی کمیشن کا اعلان بدنیتی پر مبنی ہے، موجودہ حکومت امپورٹڈ سازش کا حصہ ہے، ٰہمارا مطالبہ سپریم کورٹ کے تحت کمیشن کا قیام ہے۔

انہوں نے کہا کہ حمزہ شہباز قطر کے نجی دورے پر ہیں وہ واپسی پر مقصود چپڑاسی کو بھی لے آئیں، پنجاب میں جعلی وزیراعلیٰ کا جعلی الیکشن ہوا۔

فرخ حبیب نے کہا کہ کل الیکشن کمیشن میں اہم سماعت ہے، الیکشن کمیشن آرٹیکل 63 اے پر عمل در آمد کرے، الیکشن کمیشن ایک ماہ میں فیصلے کا پابند ہے لیکن الیکشن کمیشن فیصلے میں تاخیر کر رہا ہے۔

0Shares

Comments are closed.