شہبازشریف حکومت کا بڑا یو ٹرن، یکم مئی سے لوڈ شیڈنگ ختم کرنے کا اعلان واپس

اسلام آباد(زمینی حقائق ڈاٹ کام) وزیراعظم شہبازشریف حکومت کا بڑا یو ٹرن، یکم مئی سے لوڈ شیڈنگ ختم کرنے کا اعلان واپس ، وزیراعظم شہبازشریف نے چار دن قبل یکم مئی سے ملک بھر میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ کرنے کااعلان کیا تھا۔

وزیرِ اعظم شہباز شریف کی زیرِ صدارت  چار دن قبل ہونے والے اجلاس میں ملک میں بجلی کی اعلانیہ اور غیر اعلانیہ ختم کرنے کا فیصلہ ہونے کے بع وزیراعظم شہباز شریف نے یکم مئی سے بجلی کی لوڈ شیڈنگ مکمل ختم کرنے کااعلان کیا تھا۔

حکومت کی طرف سے اسے عوام کےلئے عید کا تحفہ قرار دیتے ہوئے کہا گیا تھا کہ
وزیرِ اعظم شہباز شریف نے یکم مئی سے ملک میں لوڈ شیڈنگ مکمل ختم کرنے کے ہدایت کردی ہے۔

یکم مئی شروع ہونے سے چند گھنٹے قبل حکومت ملک میں لوڈ شیڈنگ مکمل ختم کرنے کے اپنے اس اعلان سے دستبردار ہوگئی ہے، پاور ڈویژن کے اعلامیہ میں کہا گیاہے کہ پچاس فیصد لوڈ شیڈنگ جاری رہے گی۔

پاورڈویژن کے اعلامیہ کے مطابق وزیر اعظم شہباز شریف نے یکم مئی سے لوڈشیڈنگ مکمل ختم کرنے کی ہدایت کی تھی یکم مئی سے بجلی کی پیداوار میں 2 ہزار میگاواٹ کا اضافہ ہو گا۔

اجلاس کے بعدبریفنگ میں  بتیا گیا تھا کہ 20 بجلی گھروں کے دوبارہ چلنے سے بجلی کی پیداوار میں اضافہ ہوا ہے، گزشتہ حکومت نے چار سال میں بجلی گھروں کے لیے ایندھن نہیں خریدا.

موجودہ حکومت نے صرف دو ہفتے میں نہ صرف ایندھن کا انتظام کیا بلکہ ان بجلی گھروں سے بجلی کی پیداوار بڑھا کر لوڈ شیڈنگ کا سدِ باب بھی کیا جا رہا ہے۔

یہ بتایا گیا  تھاکہ ملک میں بجلی کی مجموعی پیداوار تقریباً 18500 میگا واٹ ہے جبکہ طلب کے لحاظ سے بجلی کا شارٹ فال 500 سے 2000 میگا واٹ ہے، 27 بجلی گھر ایندھن نہ ہونے کی وجہ سے یا دیگر تکنیکی خرابیوں کی وجہ سے بند پڑے ہیں۔

وزیرِ اعظم شہباز شریف کا کہنا تھا کہ عوام کو گرمیوں میں بجلی کی لوڈشیڈنگ سے مشکلات میں مبتلا نہیں کر سکتے، ایندھن کے مربوط اور مستقل نظام کی تشکیل اور گرمیوں میں آئندہ ماہ کی پیشگی منصوبہ بندی کی جارہی ہے۔

0Shares

Comments are closed.