عدم اعتماد سے پہلے جنوبی پنجاب صوبے کا آئینی بل بھی اہمیت اختیا رکر گیا

Pakistani Rangers cordon off the Parliament during an ongoing protest by followers of Imran Khan and Tahir-ul-Qadri in Islamabad on August 27, 2014. Pakistan's embattled prime minister said August 27 he would not cave in to protests demanding his resignation, striking a defiant note in his first major speech since the crisis erupted two weeks ago. Thousands of Khan's and Qadri's followers have been camped outside parliament since August 15 demanding Sharif quit, claiming the election which swept him to power last year was rigged. AFP PHOTO/Farooq NAEEM

اسلام آباد( زمینی حقائق ڈاٹ کام)قومی اسمبلی اجلاس آج شام،عدم اعتماد سے پہلے جنوبی پنجاب صوبے کا آئینی بل بھی اہمیت اختیا رکر گیا،ایجنڈے میں حکومت کا پیش کردہ جنوبی پنجاب صوبے کے قیام سے متعلق آئینی ترمیم بل شامل ہے۔

بل کے مسودے کے تحت جنوبی پنجاب صوبے کی قومی اسمبلی میں 56 نشستیں ہوں گی جن میں 46 جنرل نشستیں اور صوبائی اسمبلی کی 119 نشستیں ہوں گی، جنوبی پنجاب کو ملک کا پانچواں صوبہ بنانا پی ٹی آئی کے انتخابی منشور میں شامل تھا۔

قواعد کے تحت جس دن سے قرارداد پیش کی جاتی ہے، اس پر 3 روز سے پہلے یا 7 روز بعد ووٹ نہیں دیا جاسکتا،اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کو آئین کے روڈ میپ کو بھی پیش نظر رکھناہے۔

اپوزیشن ایوان اندر اور باہر احتجاج کا منصوبہ بنائے ہوئے ہے، اپوزیشن کااحتجاج بھی صورتحال کو اپنے لئے خراب کرسکتاہے، پارلیمنٹ کے باہر پرتشدد احتجاج کے باعث حالات کا رخ بدل جائے گا۔

حکومت و اپوزیشن کو جتنے بھی ارکان کی طرف سے یقین دہانیاں ملی ہیں ان کی تاحال کوئی حثیت نہیں ، ایوان کے اندر گنتی ہی اصل فیصلہ کرے گی، اپوزیشن کو اب تک 163 ایم این ایز کی حمایت حاصل ہے جب کہ مطلوبہ ہندسہ172ہے۔

صرف ق لیگ کی حمایت سے بھی بات نہیں بنے گی، دیگر اتحادیوں نے اپوزیشن کا ساتھ نہ دیاتو پھر بھی تحریک کامیاب نہیں ہوگی ،ق لیگ کو اپوزیشن کے ساتھ ساتھ حکومت بھی منانے کی کوششیں جاری رکھے ہوئے ہے۔

0Shares

Comments are closed.