عدم اعتماد پر ایک گھنٹہ پہلے بھی صورتحال بدل سکتی ہے، شیخ رشید

اسلام آباد( زمینی حقائق ڈاٹ کام )وفاقی وزیرداخلہ شیخ رشید نے تحریک عدم اعتماد پر ایک گھنٹہ پہلے بھی صورتحال بدل سکتی ہے، شیخ رشید احمد کہتے ہیں،29 کی شام سے 31 کی شام آریا پار ہو جائے گا۔

وزیر داخلہ شیخ رشید نے پریس کانفرنس میں کہا میرا سیاسی وجدان کہتا ہے کہ ایک گھنٹہ پہلے تک بھی صورتحال بدل سکتی ہے، 172 بندے انہوں نے لانے ہیں ہم نے نہیں، میں چاہتاہوں کہ ملک میں جمہوریت چلے۔

شیخ رشید نے کہا کہ جے یو آئی کا این او سی ختم ہو چکا ہے، جے یوآئی کے پاس آج کے جلسے اور دھرنے کی اجازت نہیں ہے، مسلم لیگ ن کوآج کے جلسے کی اجازت ہے، اسمبلی کے باہرہم ذمہ دار ہیں، اسمبلی کے اندر ذمہ دار نہیں۔

انھوں نے کہا میں تو چاہتا تھا کہ پنجاب اسمبلی توڑ دی جائے تاکہ بارگننگ کاراستہ ہی نا رہے،حکومت کی اپنی حکمت عملی ہے وزیراعظم عمران خان اپنی طرح سے فیصلہ کریں گے۔

وزیر داخلہ نے کہا کہ کل عمران خان کا تاریخی عوامی سمندر کا اجتماع ہوا، وزارت داخلہ پولیس اور انتظامیہ کو مبارکباد دیتا ہوں، ن لیگ کے جلسے تو سارے راستے میں میری توقع سے زیادہ کم ہیں،

وزیر داخلہ نے کہا کہ مسلم لیگ ن کے مہنگائی مارچ راستے میں کسی بھی جگہ چار پانچ ہزار سے زیادہ لوگ نہیں تھے لوگ ان کا ساتھ دینے کو تیار نہیں ان کی ساری جنگ میڈیاپر ہی ہو رہی ہے۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ وزیراعظم کی خواہش تھی کہ میں لمبی تقریر کروں، جب بھٹو کو پھانسی لگی تو بتانا نہیں چاہتا کہ قلم کس نے لیا کہ ہم دستخط کر دیتے ہیں،حاکم علی زرداری کی سیٹ پر آصف زرداری کی ضمانت ضبط ہوئی۔

شیخ رشید کا کہنا تھا کہ عمران خان ایک آزاد خارجہ پالیسی کی بنیاد رکھ رہا ہے، مجھے اس خط کا علم نہیں جس کا ذکر کیا گیا،میں نے آپ کو اپنا سیاسی فیصلہ سنا دیا ہے، ڈیڑھ سال سے بتا رہا ہوں کہ اسٹیبلشمنٹ صرف پاکستان کے ساتھ ہے۔

انہوں نے کہاکہ خرید و فروخت کی منڈی لگی ہوئی ہے، چاہتا تھا پنجاب اسمبلی توڑ دیں، وزیراعظم کو حج کے بعد انتخابات کرانے کی تجویز دی تھی،ان کاکہنا تھا کہ اگر آج قومی اسمبلی میں قرارداد پیش ہوئی تو پیر کو ووٹنٹگ کا امکان ہے۔

0Shares

Comments are closed.