وزیراعظم کا سیاسی ریسکیو آپریشن، اتحادیوں سے ملاقاتیں، تحفظات پر یقین دہانیاں

کراچی(زمینی حقائق ڈاٹ کام) تحریک عدم اعتماد کے بعد وزیراعظم کا سیاسی ریسکیو آپریشن، اتحادیوں سے ملاقاتیں، تحفظات پر یقین دہانیاں ، وزیراعظم عمران خان نے کہا ساتھ دیں اپوزیشن کی یہ آخری کوشش ہے پھر 2028تک ہم ہی ہوں گے۔

ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے ایم کیو ایم کے مرکزبہادرآباد میں متحدہ کے رہنماوں سے ملاقات کی، خالد مقبول صدیقی نے پوچھا وزیراعظم صاحب کیا صورتحال ہے اور کیا پالیسی ہے، عمران خان نے کہا خالد آپ کو سب پتہ ہے۔

عمرا ن خان نے کہا ایم کیو ایم نے ہمیشہ حکومت کا ساتھ دیا ، ہم نے بھی کراچی کو ترجیح میں رکھا، مردم شماری پر تحفظات دور کئے اور حل کی جانب بڑھ رہے ہیں، خالد مقبول نے کہا جناب کئی مسائل اب بھی حل طلب ہیں۔

http://

وزیراعظم نے ایم کیو ایم کی قیادت کو تمام تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ انشاء اللہ حکومت کو ناکامی ہو گی پھر ہم دیر تک ساتھ ہیں،کراچی کے مسائل پر پی ٹی آئی ارکان کے ساتھ رابطے میں رہتا ہوں۔

ایم کیوایم کی قیادت سے ہونے والے اس ملاقات میں وفاقی وزراشاہ محمود قریشی ، اسدعمر، علی زیدی موجودتھے جبکہ ایم کیو ایم کی جانب سے خالد مقبول، عامر خان ، امین الحق ، کنور نوید ،وسیم اختر ودیگر شریک تھے۔

ایم کیو ایم کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے امین الحق کی کارکردگی کو سراہا، کہا میں اسدعمر ایم کیوایم اور کراچی کے مسائل پر بات کرتے رہتے ہیں، ہم نے سندھ حکومت سے زیادہ کراچی کو اون کیا اور ایم کیوایم کے مسائل بھی ہمیشہ حل کرنے کی کوشش کی۔

عمران خان نے کراچی کو گرین لائن پروجیکٹ کی بھی بات کی ،اس سے قبل بہادر آباد پہنچنے پر ایم کیو ایم کی قیادت اور پی ٹی آئی اراکین نے وزیراعظم عمران خان کا استقبال کیا ، ملاقات ہوئی جو تقریباً آدھا گھنٹہ جاری رہی۔

ذرائع کے مطابق ایم کیو ایم کی قیادت نے مسائل پر زیادہ بات نہیں کی ، خالد مقبول کے ایک جملے کے سوا کوئی شکایت بھی نہیں کی گئی تاہم وزیراعظم نے کہا مجھے مسائل کا پتہ ہے حکومت وعدے کے مطابق حل کرے گی۔

http://

وزیراعظم عمران خان نے جی ڈی اے قیادت سے بھی ملاقات کی اور ان کا موقف بھی سنا ، اس دوران موجودہ سیاسی صورتحال کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا گیا، وزیراعظم نے وہاں بھی کہا مجھے اتحادیوں پر بھروسہ ہے عدم اعتماد کی تحریک ناکام بنائیں گے۔

0Shares

Comments are closed.