الطاف حسین کارکنوں کو دہشگردی پر اکسانے کے الزام سے بری کردیا گیا

فوٹو : فائل

لندن(ویب ویب )بانی ایم کیو ایم الطاف حسین کارکنوں کو دہشگردی پر اکسانے کے الزام سے بری کردیا گیا،برطانوی عدالت نے بانی ایم کیو ایم کو اشتعال انگیز تقریر میں دہشت گردی الزام میں بے گناہ قرار دے دیا۔

ایم کیو ایم کے بانی الطاف حسین کے خلاف کیس میں برطانوی عدالت کی 12 رکنی جیوری نے 7 روز سماعت کے بعد متفقہ فیصلہ محفوظ کیا تھا جو کہ آج سنا دیاگیا۔

برطانوی عدالت کے فیصلے میں بانی ایم کیو ایم پر عائد دہشت گردی اور اشتعال انگیز تقاریر کو بری کردیا اور فیصلے میں کہا گیا ہے کہ بانی ایم کیو ایم پر دہشت گردی پر اکسانے کا جرم ثابت نہیں ہوا۔

عدالتی فیصلے میں کہا گیاہے کہ بانی متحدہ الطاف حسین پردہشت گردی پراکسانے کا الزام ثابت نہیں ہوسکا۔ عدالت کی جانب سے تفصیلی فیصلہ بھی آج ہی جاری کیا جائے گا۔

کراؤن کورٹ میں 8 رکنی جیوری کا انتخاب کیا گیا، جس نے گزشتہ ہفتے کے دوران ٹرائل کیا اور اس دوران استغاثہ، وکیل دفاع، عینی شاہدین سمیت دیگر کے بیانات قلم بند کر کے تقریر کے ٹرانسپکرٹ کو بھی بغور دیکھا۔

یاد رہے بانی ایم کیو ایم کو 22 اگست 2016 کی تقریر میں دہشت گردی اور اشتعال انگیزی کو فروغ دینے کے دو الزامات کا سامنا تھا، جس پر برطانوی پولیس نے تحقیقات کر کے چالان عدالت میں پیش کیا تھا۔

0Shares

Comments are closed.