تحریک عدم اعتماد پر کام جاری اور اتحادی ساتھ ہیں،مسلم لیگ ن

اسلام آباد( زمینی حقائق ڈاٹ کام)تحریک عدم اعتماد پر کام جاری اور اتحادی ساتھ ہیں،مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب کا کہناہے کہ اکستان مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف اور پارٹی نے شہباز شریف کو ٹاسک دے دیا ہے۔

مسلم لیگ ن کی ترجمان مریم اورنگزیب نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس میں بتایا کہ ممکنہ تحریک عدم اعتماد کے سبب حکومتی اتحادی اپنے حلقوں میں نہیں جاسکتے تاہم وہ ہمارے ساتھ رابطے میں ہیں۔

انھوں نے واضح کیاکہ پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) آج فیصلہ کرے گی کہ عدم اعتماد کب کرنا ہے اور اس حوالے سے پیپلز پارٹی اپنا مؤقف واضح طور پر دے چکی ہے۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ شہباز شریف آج بھی عدالت میں پیش ہوئے لیکن عمران خان نے ملک میں انصاف کی دھجیاں اڑا دی ہیں اور عوام کو معاشی تباہی کا سامنا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ عمران خان ملکی مسائل کے حل کے لیے صرف ترجمانوں کا اجلاس بلاتے ہیں لیکن آج تک شہباز شریف کے خلاف ایک کیس بھی ثابت نہ ہوسکا۔ قوانین کو توڑ مروڑ کر شہباز شریف کے خلاف مقدمات بنائے گئے۔

ترجمان مسلم لیگ ن نے الزام لگایا کہ وزیر اعظم عمران خان قائد حزب اختلاف شہباز شریف کو جیل بھیجنے کے لیے بھرتیاں کر رہے ہیں اور شہباز شریف پر کیسز ثابت کرنے کے لیے شہزاد اکبر کو ذمہ داری دی گئی تھی۔

مریم اورنگزیب نے پریس کانفرنس میں انکشاف کیا کہ شہزاد اکبر نے وزیر اعظم کو ہاتھ جوڑ کر کہا شہباز شریف پر یہ کیسز نہیں بنتے اور جس کے بعد وزیر اعظم نے شہزاد اکبر کو ہٹا دیا۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے سرکاری مشینری کو شہباز شریف کے خلاف لگایا اور ڈیلی میل سے کام نہ بنا تو این سی اے کو استعمال کرنے کی کوشش کی گئی۔ اداروں میں چہرے بدلتے ہیں الزامات وہی ہیں۔

ترجمان ن لیگ نے کہا کہ کاغذ لہرانے والے آج غائب ہیں اور وکیلوں پر اربوں روپے خرچ کیے گئے، نئے مشیر احتساب کو وزیر اعظم نے بلایا اور کہا شہباز شریف کے خلاف کیس چاہیے لیکن این سی اے نے کہا کوئی کک بیک نہیں اور کوئی منی لانڈرنگ نہیں ہے۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ وزیر اعظم کرسی سے ہٹے تو یہ کرائے کے ترجمان نظر نہیں آئیں گے، شہزاد اکبر اب احتساب سے نہیں بچ سکتے اور سرکاری افسران شہزاد اکبر کا حال دیکھ لیں۔

0Shares

Comments are closed.