میرا پی اے مجھ سے ڈبل تنخواہ لیتا ہے، گورنر خیبرپختونخوا

اسلام آباد(زمینی حقائق ڈاٹ کام)میرا پی اے مجھ سے ڈبل تنخواہ لیتا ہے، گورنر خیبرپختونخوا شاہ کہتے صدر سے کہا تھا تنخواہ بڑھا دیں،گورنر ہاؤس میں باربر تک نہیں، اپنی شیو بھی خود کرتا ہوں۔

خیبر پختونخوا کے گورنر شاہ فرمان نے اپنے بیان میں اپنے مسائل بیان کئے ہیں، ان کا کہنا تھاکہ گورنر ہاؤس میں مسالچی کچن میں باروچی کی مدد کیلئے ہوتا ہے، حیران ہوں کہ لوگوں کو مسالچی اور مالشی میں فرق نہیں پتا۔

انھوں نے کہا میں نے گورنر ہاؤس میں باربر بھہی نہیں رکھا، اپنی شیو خود کرتا ہوں، گورنر ہاؤس کا خرچ 2 کروڑ سےواپس 70 لاکھ روپے تک محدود کیا ، بحیثیت گورنر میری تنخواہ 86 ہزار اور میرے پی اے کی تنخواہ ایک لاکھ 72 ہزار روپے ہے۔

شاہ فرمان کے بقول وہ گورنر ہاؤس سے اسلام آباد جاتے ہیں کبھی سرکاری خرچ پر لاہور یا کراچی بھی نہیں گیا، کئی سال سے سرکاری یا غیرسرکاری دورے پر نہیں گیا، عوامی مفاد کے کام کے سوا سرکاری ہیلی کاپٹر استعمال نہیں کرتے.

شاہ فرمان نے کہا کہ گورنر بننے سے میرے اثاثوں میں اضافہ نہیں ہوا بلکہ کم ہوئے ہیں،
بلدیاتی الیکشن سے متعلق ان کا کہنا تھاکہ تین امیدواروں میں رضوان بنگش کی نامزدگی کے فیصلے پر قائم ہوں، رضوان بنگش نے یو اے ای میں پارٹی کیلئے بہت کام کیا.

شاہ فرمان نے اپنے فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ وہ جتنے ووٹوں سے ہارے اس سے دگنا سے زائد ووٹ مسترد ہیں۔یہ بھی کہا کہ ارباب محمد علی کے الزامات پر قانون نوٹس دے چکا ہوں، ماضی میں ارباب محمد علی کے پارٹی ٹکٹ کیلئے لڑا تب بھی یہ الزام لگایا گیا.

انھوں نے کہا کہ امیدوار سے متعلق مجھے سے رائے لی گئی اور جو فیصلہ ہوا میں نے اس کی توثیق کی، شاہ فرمان نے کہا سیاست عمران خان کے ساتھ شروع کی اور ان کے ساتھ ہی ہوگی ورنہ سیاست نہیں کروں گا، گورنرشپ سے ہٹا دیں تب بھی عمران خان کے ساتھ رہوں گا.

گورنر نے کہا کہ مجھے اپنے نظریات سے کوئی نہیں ہٹاسکتا چاہے کوئی اس سے خوش ہو نہ ہو، شاہ فرمان کا کہنا تھاکہ تنخواہ کم ہے، کئی دفعہ صدرسے درخواست کی کہ تنخواہ بڑھا دیں، 2 اکتوبر کو 9 کروڑ 60 لاکھ روپے اس فنڈ کے واپس کیے جس کا کوئی ریکارڈ بھی نہیں ہوتا.

انھوں نے کہا جو فنڈ میں نے واپس کیا وہ نقد تقسیم کیا جاسکتا تھا، ایک روپیہ نہیں لیا،ان کا کہنا تھاکہ ایم پی اے کی تنخواہ بھی 3 لاکھ تک پہنچ جاتی ہے۔

0Shares

Comments are closed.