تارکین وطن کو رئیل اسٹیٹ میں سرمایہ کاری پر ٹیکس میں چھوٹ ملے گی،وزیراعظم

اسلام آباد(زمینی حقائق ڈاٹ کام)وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے حکومت ایک پروگرام لا رہی ہے جس کے تحت ریئل اسٹیٹ میں سرمایہ کاری کرنے پر اوورسیز پاکستانیوں کو ٹیکس میں چھوٹ دی جائے گی۔

اسلام آباد میں سوہنی دھرتی ریمیٹنس پروگرام کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان کا مسئلہ یہ ہے کہ ماضی میں برآمدات پر توجہ نہیں دی گئی حالانکہ 60 کی دہائی میں برآمدات بہت زیادہ تھیں۔

وزیراعظم نے کہا برآمدات بڑھنے تک اس کا حل ترسیلات زر ہے، جو اوورسیز پاکستانیز بھجواتے ہیں،انہوں نے کہا کہ برآمدات کم ہونے سے ملک کو نقصان ہوا اور اگر معیشت بہتر ہوتی بھی تو کرنٹ اکاؤنٹ پر پریشر بڑھ جاتا ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ کرنٹ اکاؤنٹ دباو کے باعث آئی ایم ایف کے پاس جانا پڑا، وزیراعظم، وزیر اعظم نے ایک بار پھر اوورسیز پاکستانیوں کو ملک کا قیمتی اثاثہ ہیں انہوں نے ہر مشکل وقت میں ملک کا ساتھ دیا۔

عمران خان نے کہا کہ روشن ڈیجیٹل پروگرام کے ذریعے اوورسیز گھر بھی خرید سکتے ہیں تارکین وطن کو رئیل اسٹیٹ میں سرمایہ کاری پر ٹیکس میں چھوٹ ملے گی،وزیراعظم نے کہا ریئل اسٹیٹ میں بھی سرمایہ کار کر سکتے ہیں،اس کے ذریعے سرمایہ کاری میں فراڈ کا خدشہ نہیں ہے۔

انھوں نے کہا کہ سوہنی دھرتی پروگرام سے اوورسیز پاکستانیوں کو بہت فائدہ ہو گا، اس کو پہلے شروع کیا جانا چاہیے تھا ہم چاہتے ہیں کہ بیرون ملک پاکستانیوں کو پاکستان میں مسائل کاسامنا نہ کرنا پڑے۔

اس سے قبل حکومت پاکستان نے سمندر پار پاکستانیوں کے لیے سوہنی دھرتی ریمیٹنس پروگرام شروع کیاجس کا افتتاح وزیراعظم عمران خان نے کیا۔

وزیر اعظم آفس کی جانب سے جاری اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ سمندر پار پاکستانیوں کے لیے سہولیات فراہم کرنے کے ویژن کے تحت سٹیٹ بنک سوہنی دھرتی ریمیٹنس پروگرام کا اجرا کرنے جا رہا ہے۔

پروگرام کے تحت اسٹیٹ بنک کے تفویض کردہ ذرائع سے بھیجی جانے والی ترسیلاتِ رز کے عوض سمندر پار پاکستانیوں کو ریوارڈ پوائنٹس حاصل ہوں گے جن کے ذریعے وہ سرکاری اداروں سے دی جانے والی خدمات کا مفت استعمال کر سکیں گے۔

اعلامیہ کے مطابق اس کے لیے موبائل ایپلیکیشن کا اجرا بھی کیا جا رہا ہے جس کے تحت سمندر پار پاکستانی اپنے ریوارڈ پوائنٹس کے عوض نہ صرف سرکاری اداروں کی خدمات حاصل کر سکیں گے۔

0Shares

Comments are closed.