پٹرول کی قیمت میں بڑا اضافہ، نئی قیمت ملکی تاریخ کی بلند سطح پر

اسلام آباد(زمینی حقائق ڈاٹ کام)وفاقی حکومت نے ایک بار پھر پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں بڑا اضافہ کردیاہے اور پٹرول رات گئے 8روپے3پیسے مہنگا کردیا گیاہے، پٹرول کی قیمت ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی۔

وزارت خزانہ نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا نوٹیفکیشن رات گئے جاری کیا جس کے مطابق پیٹرول کی قیمت میں 8روپے 3پیسے فی لیٹر اضافہ ہوا ہے، جس کے بعد پیٹرول کی نئی قیمت 145روپے 82پیسے فی لیٹر ہوگئی ہے۔

وزارت خزانہ کی جانب سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے نوٹیفکیشن کے مطابق ہائی اسپیڈ ڈیزل کی قیمت میں8روپے 14پیسے فی لیٹر اضافہ کیا گیا ، جبکہ مٹی کے تیل کی قیمت 6روپے27 پیسے اضافے سے 116 روپے53 پیسے ہوگئی ہے۔

اس کے علاوہ لائٹ ڈیزل آئل کی قیمت میں5روپے72پیسے اضافہ کردیا گیا ہے ،لائٹ ڈیزل آئل کی نئی قیمت114روپے7پیسے فی لیٹر مقرر ہوگئی ہے۔

پٹرولیم مصنوعات کی قیمتو ں میں ظالمانہ اضافہ کے باوجودوزارت خزانہ کی طرف سے یہ دعویٰ کیا گیاہے کہ حکومت نے سیلز ٹیکس اور پیٹرولیم کی مد میں زیادہ دباؤخود برداشت کیا ہے۔

واضح رہے وزیراعظم عمران خان نے ایک دن قبل تخیلانہ اندازے کے مطابق عوام کے لیے ریلیف پیکج کا اعلان کیا تھا اور ایک دن بعد ہی پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں بڑا اضافہ کردیاجس کے بعد پیٹرول کی قیمت ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی۔

وزیراعظم کی طرف سے صرف ڈیٹا کی بنیاد پر غربت کا تخیلاتی اندازہ لگایا گیاہے اور کروڑوں افراد کو کورونا ریلیف کی طرح اعلان کردہ ریلیف میں بھی شامل نہیں کیا گیا اور ایک ادارے کے سروے کی بنیاد پر غربت کی تخیلاتی کہانی سنائی گئی۔

0Shares

Comments are closed.