پیمرا کاافسر خاتون ملازمہ کو ہراساں کرنے پر برطرف، 20لاکھ جرمانہ

اسلام آباد( زمینی حقائق ڈاٹ کام)پاکستان الیکٹرونک میڈیا اتھارٹی (پیمرا) کے ڈی جی ایڈمن اینڈ ایچ آر کو ایک خاتون ڈیلی ویجز ملازمہ کو ہراساں کرنے کے الزام میں ملازمت سے برطرف کردیا گیا، 20لاکھ روپے بطور جرمانہ ادا کرنے کا حکم بھی دیا۔

متاثرہ خاتون سدرہ کریم نے 20 جنوری 2020 کو پیمرا کے ڈی جی ایڈمن اینڈ ایچ آر حاجی آدم کے خلاف ہراسانی کی درخواست دی تھی جس پروفاقی محتسب برائے انسداد ہراسیت نے جنسی طور پر ہراساں کرنے کا الزام ثابت ہونے پر سزا سنائی۔

وفاقی محتسب برائے انسداد ہراسیت نے سرکاری افسر کو نوکری سے برطرف کرتے ہوئے 20 لاکھ روپے جرمانہ جب کہ ہراسانی میں معاونت کرنے والے شخص کو پانچ لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنائی ہے۔

وفاقی محتسب برائے انسداد ہراسیت کشمالہ طارق نے دائر درخواست پر ایک سال 10 ماہ بعد تحریری فیصلہ جاری کیا ہے،فیصلے میں کہا گیا پیمرامیں ڈیلی ویجز ملازمہ سدرہ کریم نے پیمرا کے ڈی جی ایڈمن اینڈ ایچ آر حاجی آدم کے خلاف ہراسانی کی درخواست دی تھی۔

درخواست پر کارروائی کرتے ہوئے وفاقی محتسب نے فروری 2020 میں ڈی جی کو عارضی طور پر معطل کرنے کا حکم دیا تھا تاہم ڈی جی نے وفاقی محتسب کے حکم کو دو بار اسلام آباد ہائی کورٹ میں چیلنج کیا تھا جبکہ صدر مملکت کے سامنے بھی اپیل فائل کی تھی۔

فیصلے میں تاخیر کی وجہ ہی ملزم کی طرف سے فیصلے کو بار بار چیلنج کرنا ہی تھا اس دوران ملزم بار بار کیس کو ایک فورم سے دوسرے اور دوسرے سے تک لے کر جاتا رہا۔ فیصلے میں تاخیر کی ذمہ داری بھی ملزم پر ہی عائد ہوتی ہے۔

فیصلے میں لکھا ہے کہ اس کیس کی کارروائی کے دوران درخواست گزار اپنا کیس ثابت کرنے میں کامیاب ہوئی ہیں کہ انھیں ڈی جی ایڈمن اینڈ ایچ آر کی جانب سے 11 نومبر 2019 کو ہراساں کیا گیا کیونکہ انھوں نے ملزم کے ساتھ ناجائز تعلقات رکھنے سے انکار کیا تھا۔

ملزم کو خاتون کو ہراساں کرنے کے اس کیس میں ملزم کو اپنے ایک اور ساتھی اہلکار کی بھی معاونت حاصل تھی اور ملزم اپنے دفاع میں کامیاب نہیں ہو سکا،اس لیے وفاقی محتسب نے ملزم کو 20 لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنائی۔

فیصلے کے مطابق درخواست گزار کو ذہنی اذیت سے گزرنے کی وجہ سے بطور معاوضہ ادا کیے جائیں گے جبکہ ملزم کو ملازمت سے برطرف کرنے کا بھی حکم دیا ہے، ملزم کے معاون کو بھی پانچ لاکھ روپے جرمانہ کیا جو درخواست گزار کو بطور معاوضہ ادا کیا جائے گا۔

فیصلے میں پیمرا کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ حکم نامہ ملنے کے ساتھ دن کے اندر اندر ڈی جی ایڈمن اینڈ ایچ آر کو ملازمت سے فارغ کریں، جب کہ پیمرا کو یہ بھی ہدایت کی گئی ہے کہ وہ ہراسانی کے واقعات کو روکنے کے لیے ادارے میں مستقل کمیٹی قائم کرے۔

0Shares

Comments are closed.