حکومت سے معاہدہ کسی کی شکست یا فتح نہیں، مفتی منیب الرحمان

اسلام آباد(زمینی حقائق ڈاٹ کام)مفتی منیب الرحمان نے کہا ہےحکومت اور مذہبی جماعت کے درمیان معاہدہ پر حافط سعد رضوی کا بھی تعاون حاصل ہے.

منیب الرحمان نے پریس کانفرنس میں بتایا کہ وزیراعظم نے 3 افراد پر مشتمل کمیٹی قائم کی، شاہ محمود قریشی، اسد قیصر اور علی محمد خان اس کمیٹی میں شامل تھے۔

مفتی منیب الرحمان نے کہا کہ وزیر اعظم کا شکر گزار ہوں انہوں نے اس کمیٹی پر اعتماد کیا، کمیٹی نے سنجیدگی سے اس مسئلے کے حل میں اپنا کردار ادا کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ کہ تحریک کی شوری کی جانب سے بھی سنجیدگی سے لیا گیا، اسے کسی کی فتح یا شکست نہ سمجھا جائے یہ حب الوطنی کی فتح ہے۔

معروف عالم دین کا کہنا ہے کہ حکومت اور مذہبی جماعت کے مابین معاہدہ طے پا گیا ہے، معاہدے کے نتیجے میں ایک اسٹیئرنگ کمیٹی بنا دی گئی ہے.

ہماری مرضی سے بننے والی اس کمیٹی میں علی محمد خان کی سربراہی میں اسٹیئرنگ کمیٹی معاہدے کی نگرانی کرے گی، کمیٹی آج سے کام شروع کر دیا ہے۔

مفتی منیب الرحمان نے کہا کہ آئندہ ہفتے معاہدے کے نتائج سامنے آجائیں گے، فریقین کے درمیان اتفاق رائے سے معاہدہ طے پاچکا ہے، تناؤ کی فضا میں جذبات کو قابو میں رکھنا خوش آئند ہے۔

انھوں نے کہا معاہدے کی تفصیلات مناسب وقت پر سامنے آئیں گی، یہ کسی کی فتح یا شکست نہیں پاکستان کی فتح ہے، کمیٹی کو اختیارات دینے پر وزیراعظم کے مشکور ہیں۔

مفتی منیب الرحمان کا کہنا ہے کہ ہم ذمےداروں کی یقین دہانی پر آپکو یقین دلاتے ہیں، اس معاہدے پر عمل کیا جائے گا، سب کو معلوم ہے حکومت کے پاس طاقت اور ادارے ہوتے ہیں، کیا یہ حماقت نہیں کہ لوگوں کو یہ بات بتائی جائے۔

اس موقع پر وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں مذکرات کو ترجیح دینے کا فیصلہ ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ قوم میں ایک اضطراب کی کیفیت تھی، لوگوں کو زخمی ہوتے اور املاک کو نقصان پہنچتے دیکھا، تمام مسائل کو سامنے رکھتے ہوئے امن کا راستہ تلاش کیا گیا ہے۔

0Shares

Comments are closed.