فیس بک ، وٹس ا پ، انسٹاگرام بندش سے مارک زکر برگ کو6ارب ڈالر کا نقصان

اسلام آباد( ویب ڈیسک)فیس بک تقریباً6گھنٹے بند ہونے سے مارک زکربرگ کی دولت میں 6 ارب امریکی ڈالر یعنی پاکستانی 10 کھرب روپے سے زائد کی کمی ہوئی ہے یعنی سروس بندش کا انھیں بھاری نقصان اٹھانا پڑاہے۔

یہ انکشاف امریکی اخبار بلوبر گ نے فیس بک کی سابق خاتون ملازمہ فرانسس ہافن کا حوالہ دیتے ہوئے کیاہے ، خاتون ملازمہ کے مطابق
یہ نقصان فیس بک، واٹس ایپ اورانسٹاگرام سروسز میں گزشتہ شب ہونے والے تعطل کی وجہ سے ہوا ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیاہے کہ مارک زکربرگ دنیا کے تیسرے امیر ترین شخص سے نیچے آکر پانچویں امیر شخص بن گئے ہیں اور حیران کن طور پر وہ مائیکرو سافٹ کے بانی بل گیٹس اور فرانسسی کاروباری شخص برنارڈ ارنالٹ کے امیر ہونے کے نمبرز سے بھی پیچھے چلے گئے ہیں۔

رپورٹ میں یہ بھی انکشاف ہوا کہ مارک زکربرگ کی دولت میں کمی صرف فیس بک، واٹس ایپ اور انسٹاگرام کی سروس بند ہونے کی وجہ سے نہیں ہوئی بلکہ سابق ملازمہ فرانسس ہافن کی جانب سے حال ہی میں کیے گئے انکشافات کی وجہ سے بھی انہیں پیسوں سے ہاتھ دھونا پڑا۔

فیس بک کی سابق ملازمہ فرانسس ہافن نے حال ہی میں امریکی ٹی وی سی بی ایس کو دیے گئے انٹرویو میں انکشاف کیا تھا کہ فیس بک کمائی کی خاطر پرتشدد، توہین آمیز مواد سمیت غلط معلومات کی حوصلہ افزائی کرتا ہے اور اس کی واضح مثال فیس بک پر موجود مواد ہے۔

بتایا جاتاہے کہ فیس بک کی سابق ملازمہ کے بیان کے بعد ہی مارک زکربرگ کی کمائی کم ہونے لگی تھی کیوں کہ فیس بک کے شیئرز میں کمی دیکھی گئی تھی اور پھر 4 اور 5 اکتوبر کی درمیانی شب کو ان کی سروسز بند ہوگئیں، جس وجہ سے انہیں مزید دولت سے ہاتھ دھونا پڑا۔

رپورٹ کے مطابق فیس بک، واٹس ایپ اور انسٹاگرام کی سروسز بند ہونے کی وجہ سے مارک زکربرگ کی ذاتی دولت میں فی گھنٹہ ایک ارب امریکی ڈالر یعنی پاکستانی ڈیڑھ کھرب روپے تک کی کمی دیکھی گئی۔

واضح رہے دنیا کی سب سے بڑی سوشل ویب سائٹ فیس بک اور اس کی ذیلی ایپس انسٹاگرام اور واٹس ایپ 4 اور 5 اکتوبر کی درمیانی شب دنیا بھر میں بند ہوگئی تھیں جن کی سروسز 6گھنٹوں سے زائد وقت کے بعد بحال ہوئیں۔

0Shares

Comments are closed.