مصباح کو اسٹریلیاکی ٹیم بھی دیں تو وہ اسے کینیا جیسا بنا دینگے، عاقب جاوید

اسلام آباد( سپورٹس ڈیسک) سابق فاسٹ بولر عاقب جاوید نے مصباح الحق کی کارکردگی پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ مصباح الحق کو آسٹریلیا کی ٹیم بھی دے دیں تو وہ ایک سال میں اس کا حال بھی کینیا جیسا حال کردیں گے۔

نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے پاکستان کے سابق فاسٹ بولر عاقب جاوید نے کہا کہ مصباح نے ایک نمبر پر 6،6 لڑکوں کو آزمایا پھر بھی کوئی بھی نہ بن سکا۔

عاقب جاوید نے کہا کہ وقار یونس کو ایک بار پھر مشورہ دیتا ہوں کہ وہ دوبارہ کمنٹری کرنے کی بجائے پہلے جا کر کوچنگ سیکھیں، وقار یونس سمجھتے ہیں کہ خود تیز گیند کرتے تھے تو ان سے اچھا کوئی نہیں۔

انہوں نے کہا کہ کوئی بتائے گا کہ آصف علی اور خوشدل شاہ کس کارکردگی پر ٹیم میں آئے ہیں، اعظم خان باصلاحیت کھلاڑی ہیں لیکن ان کی فٹنس پر سوالیہ نشان لگ رہے ہیں ، اگر آپ فٹنس پر سمجھوتہ کیا جائے گا تو اس کا نقصان قومی ٹیم کو ہوگا۔

عاقب جاوید نے کہا کہ متحدہ عرب امارات کی کنڈیشنز کا قومی کھلاڑیوں کو تجربہ ہے، ورلڈ کپ میں قومی ٹیم اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرسکتی ہے، اگر کھلاڑیوں کا استعمال درست ہو تو ورلڈ کپ سیمی فائنل کھیل سکتے ہیں۔

سابق فاسٹ بولر نے کہا کہ پاکستان میں کرکٹ تیزی سے نیچے جارہی ہے، رمیض راجہ کو چیئرمین پی سی بی بنانا عمران خان کا اچھا فیصلہ ہے، رمیض راجہ کو کرکٹ کا وسیع تجربہ ہے جس سے ملکی کرکٹ کو فائدہ ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ ڈیویلپمنٹ پروگرام 2008ء میں بند ہونے سے نقصان ہوا، پروگرام سے آپ کو ہر سال ایک سے 2 کھلاڑی مل جاتے تھے لیکن اب پروگرام بند کرنے کا نقصان ہورہا ہے۔

عاقب جاوید کا کہنا تھا کہ نئے چیئرمین پاکستان کرکٹ بورڈ رمیض راجہ کے لیے سب سے بڑا چیلنج کرکٹ کو بہتر کرنا ہے، گراؤنڈ اور پچز بہتر کرنا ہوں گی، ملک بھر میں اکیڈمیز کا جال بچھانا ہوگا۔

0Shares

Comments are closed.