کابل ،طالبان کا عام معافی اور کسی سے انتقام نہ لینے کااعلان

کابل ( ویب ڈیسک) افغان طالبان نے افغانستان کے دارالحکومت کابل میں داخل ہو نے کے بعد سب کیلئے عام معافی اور کسی سے انتقام نہ لینے کا اعلان کردیاہے اور شہریوں سے کہا ہے وہ نہ گھبرائیں ہم طاقت کے زریعے کابل پر قابض نہیں ہوں گے۔

ترجمان افغان طالبان کی طرف سے جار ی بیان میں کہا گیا ہے کہ طالبان رہنماوں کی جانب سے جنگجووں کو تشدد سے گریز اورشہر سے نکلنے والوں کو محفوظ راستہ دینے کی ہدایت کی گئی ہے۔

ترجمان طالبان نے واضح کیا کہ انتقام نہیں لے رہے، تمام فوجی اور سویلین اہلکار محفوظ رہیں گے،عرب ٹی وی سے گفتگو میں طالبان ترجمان نے کہا کہ بزورِ طاقت کابل میں داخل نہیں ہوں گے۔

انھوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ افغان دارالحکومت کا کنٹرول پرامن طریقے سے ملے، اس کے لیے چند روز یا ہفتہ بھی لگا تو انتظار کریں گے،ہم تنہا اور معصوم افغان شہریوں کو زخمی یا قتل نہیں کرنا چاہتے، تاہم ہم نے کسی سیز فائر کا اعلان نہیں کیا ہے۔

دوسری طرف افغانستان کے دارالحکومت کابل میں طالبان کے داخل ہونے کے بعد اشرف غنی کی حکومت اقتدار چھوڑنے پر رضا مند ہو گئی ہے اور صدارتی محل میں مزاکرات جاری ہیں ۔

اس دوران افغانستان کے قائم مقام افغان وزیرِ داخلہ کی طرف سے بھی ایک ویڈیو بیان سامنے آیا جس میں کہا گیاہے کہ کابل پر حملہ نہ کرنے کا معاہدہ طے پا گیا ہے، عبوری حکومت کو اقتدار کی منتقلی پُرامن ماحول میں ہوگی۔

طالبان کو اقتدار کی منتقلی کے لیے افغان صدارتی محل میں مذاکرات جاری ہیں، عبداللّٰہ عبداللّٰہ معاملے میں ثالث کا کردار ادا کر رہے ہیں تاہم اس بارے میں حتمی خبر نہیں ہے کہ مزاکرات کانتیجہ کب تک نکلے گا۔

0Shares

Comments are closed.