یوم استحصال ، صدر کی قیادت میں ریلی،وزیراعظم و آرمی چیف پیغامات

0 0
Read Time:4 Minute, 49 Second


اسلام آباد( زمینی حقائق ڈاٹ کام)مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حثیت بھارت کی جانب سے ختم کرنے دو سال ہونے پرپاکستانی قوم اور حکمران کشمیریوں سے یکجہتی کیلئے سڑکوں پر نکل آئے اور یوم استحصال منایا گیا، اسلام آباد میں صدر مملکت عارف علوی اور وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے ریلیوں کی قیادت کی۔

اسلام آباد میں صدر مملکت عارف علوی نے واک کی قیادت کی، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، وزیر داخلہ شیخ رشید، وزیر اطلاعات فواد چوہدری، وزیر توانائی عمر ایوب، وزیر ہوا بازی غلام سرور خان، وزیر ریلوے اعظم سواتی، وزیر قانون فروغ نسیم سمیت دیگر وزرا اور اہم حکومتی شخصیات شریک تھیں۔

شرکاء مقبوضہ کشمیر میں بھارتی تسلط کے خلاف اور کشمیریوں سے یکجہتی کے نعرے لگاتے رہے ، کشمیر بنے گا پاکستان، قابض بھارتیوں مقبوضہ کشمیر چھوڑ دو، اقوام متحدہ کب جاگے گی؟ کشمیری بھائیوں آپ اکیلے نہیں ہم آپ کے ساتھ ہیں کے نعرے اور بینر اٹھائے ریلیوں میں شریک تھے۔

بھارت نے 5 اگست 2019 کو مقبوضہ کشمیر کو ایک ریاست کے بجائے 2 وفاقی اکائیوں میں تقسیم کرنے کا غیر قانونی حکمنامہ جاری کیا جس کے تحت اقوام متحدہ کی قرارد داوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے وادی میں آبادی کا تناسب تبدیل کرنے کے لیے غیر مقامی افراد کو زمین خریدنے کی اجازت دی گئی تھی۔

پاکستان میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے لیے منائے جانے والے یومِ استحصال کے موقع پر سرکاری سطح پر متعدد پروگرامز تشکیل دیے گئے ، اس سلسلے میں صبح 9 بجے ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی اور ملک بھر کی اہم شاہراہوں پر سڑکوں پر رواں ٹریفک روک دی گئی۔

گزشتہ برس کی طرح اس بار بھی ملک بھر میں واکس اور ریلیوں کا اہتمام کیا گیا جس میں اہم حکومتی شخصیات نے شرکت کی،اور مقررین نے اپنے خطاب میں بھارتی اقدام کو تسلیم کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ یہ اقدام غیر قانونی اور اقوام متحدہ کی کشمیر پر موجود قرارداوں کی نفی ہے جسے کبھی تسلیم نہیں کیاجائے گا۔

ریلی کے اختتام پر اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے صدر مملکت عارف علوی نے کہا کہ آج وہ دن ہے جب مقبوضہ جموں کشمیر کے عوام نے ہڑتال کا اعلان کیا کیوں کہ بھارت نے اپنے ہی آئین میں دفعہ 370 اور 35 اے کے تحت تبدیلیاں کیں، ہم سمجھتے ہیں کہ مقبوضہ کشمیر کو تقسیم ہند کے اصولوں پر پاکستان کا حصہ بننا ہے ۔

صدر کا کہنا تھا کہ اقوامِ متحدہ نے کشمیریوں کے حق خود ارادیت کا وعدہ کیا لیکن وقت کے ساتھ ساتھ دنیا خاموش ہونے لگی مگر کشمیری خاموش نہیں ہوسکا جو اپنے بچپن سے ہی ظلم و زیادتی کے خلاف کھڑے ہوجاتے ہیں، بھارتی جبر کے فیصلہ پر جبراً عمل کیلئے مقبوضہ کشمیر میں لاکھوں فوج تعینات کی گئی۔

صدر عارف علوی نے کہا آزاد کشمیر کو ہمیشہ پر امن دیکھا گیا جہاں میڈیا کو جانے کی آزادی ہے، پاکستان نے سفارتکاروں کو لے جا کر دکھایا کہ لوگ کتنی آزادی سے رہتے ہیں جبکہ مقبوضہ کشمیر میں میڈیا کو رسائی نہیں دی گئی، وہاں کرفیو لگا دیا جاتا ہے لیکن اس کے باوجود لوگ آزادی کا جھنڈا اور آواز اٹھاتے ہیں۔

صدر پاکستان نے کشمیری عوام کو مخاطبب کرتے ہوئے کہا کہ ہم آپ کے ساتھ ہیں اور رہیں گے، جب تک کشمیر آزاد نہیں ہوتا پاکستان کا کوئی فرد چین سے نہیں بیٹھے گا،بھارت مقبوضہ جموں و کشمیر میں آبادی کا تناسب تبدیل کرنے کی کوشش کررہا ہے، 30 سے 40 لاکھ غیر کشمیریوں کو وادی کا ڈومیسائل جاری کیا گیا۔

کشمیریوں کو حق ملنے تک پاکستان مقدمہ لڑتا رہے گا، وزیراعظم

یوم استحصال پر اپنے پیغام میں وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں ریاستی دہشت گردی کے ذریعے خطے کا استحکام تباہ کررہا ہے، کشمیریوں کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق ان کا حق ملنے تک آواز بلند کرتا رہوں گا، پاکستان بھرپور طریقے سے کشمیریوں کا مقدمہ لڑتا رہے گا۔

وزیر اعظم عمران خان نے ٹوئٹر پر بیان میں کہا کہ آج مقبوضہ کشمیر کے حواے سے 5 اگست 2019 کے بھارت کے یکطرفہ اور غیر قانونی اقدامات کو 2 سال مکمل ہو گئے ہیں، دنیا نے مقبوضہ کشمیر میں بھارت کی قابض افواج کا غیر معمولی ظلم و بربریت دیکھ لیا ہے، دنیا کشمیریوں کی شناخت کو تباہ کرنے اور آبادی کے تناسب کو طاقت کے ذریعے بدلنے کی بھارتی کوششوں کو بھی دیکھ رہی ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ بھارتی حکومت کی طرف سے بھارتی غیرقانونی زیر تسلط جموں کشمیر میں ظلم و بربریت آر ایس ایس کے ہندوتوا نظریے کا تسلسل ہے، آج بھارت اپنے جابرانہ اقدامات اور ریاستی دہشت گردی کے ذریعے خطے کااستحکام تباہ کر رہا ہے جو کہ تمام بین الاقوامی قوانین اور اقدار کی خلاف ورزی ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ میں نے عالمی فورمز پر کشمیریوں کی آواز بلند کی ہے اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق کشمیریوں کو اپنے مستقبل کا فیصلہ کرنے کاحق ملنے تک آواز بلند کرتارہوں گا اور پاکستان بھرپور طریقے سے کشمیریوں کامقدمہ لڑتا رہے گا۔

بھارتی تسلط سے علاقائی سلامتی کو خطرہ ہے، آرمی چیف

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باوجوہ نے کہا کہ غیر انسانی فوجی محاصرے کا تسلسل، آبادی کے تناسب میں تبدیلیاں لانے کی سازشیں، انسانی حقوق اور عالمی قوانین کی خلاف ورزیاں، بھارت کے زیر قبضہ جموں و کشمیر میں انسانیت اور سلامتی سے متعلق بحران کو ہوا دے رہی ہیں جس سے علاقائی سلامتی کو خطرہ لاحق ہے۔

آئی ایس پی آر کے ڈی جی کے ٹوئٹر سے جاری بیان میں چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ کا مزید کہنا تھا کہ خطے میں پائیدار امن و استحکام کے لیے کشمیر کے مسئلے کا اقوام متحدہ کی قرار دادوں اور کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق حل ناگزیر ہے پاکستان کشمیریوں کے لئے آواز بلند کرتا رہے گا۔

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %
0Shares

Comments are closed.

Translate »