سعودی عرب میں نماز کے دوران کارو بار بند رکھنے کی پابندی ختم

فوٹو: اردو نیوز فائل

ریاض( ویب ڈیسک)سعودی عرب میں نمازکے دوران کارو بار بند رکھنے کی پابندی ختم کردی گئی ہے اور اب نماز کے اوقات کے دوران بھی دکانیں اور کاروباری سرگرمیاں جاری رکھنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔

اس حوالے سے سعودی ایوان ہائے صنعت و تجارت کے سربراہ کی جانب سے جاری ایک سرکلر میں کہا گیا کہ سعودی عرب میں تمام تجارتی مراکز اور کاروباری سرگرمیوں کو اوقات نماز کے دوران کھلے رہنے کی اجازت ہو گی۔

اپنی ایک رپورٹ میں اردو نیوز نے خبر دی ہے کہ ایوان ہائے صنعت و تجارت کے سربراہ عجلان بن عبدالعزیز العجلان کا کہنا ہے کہ یہ خریداری کے تجربے، خریداروں اور گاہکوں کی خدمات کے معیار کو بہتر بنانے کی کوشش ہے۔

رپورٹ میں عکاظ اخبار کے حوالے سے بتایا گیاہے کہ ایوان ہائے صنعت و تجارت نے ہدایت جاری کی ہے کہ کورونا وائرس سے بچاؤ کی احتیاطی تدابیر پرعمل درآمد، صارفین کو انتظار کی زحمت اور اژدحام سے بچانے کے لیے اوقات نماز کے دوران دکانیں کھلی رکھیں۔

یہ بھی کہ تجارتی اور کاروباری سرگرمیاں کسی توقف کے بغیر کرتے رہیں،یہ سرکلر سعودی ایوان ہائے صنعت و تجارت کے تمام ممبران کو بھیجا گیا ہے اور ساتھ کہا گیاہے کہ گاہکوں کی صحت و سلامتی کے لیے یہ اقدام ضروری ہے۔

سعودی عرب کے ایوان ہائے صنعت و تجارت کے مطابق یہ فیصلہ متعلقہ حکام سے ضروری کوآرڈنیشن کے بعد کیا گیا اور اسی لئے نمام ممبرز کو بھی ارسال کیاگیاہے۔

واضح رہے کہ سعودی ارکان شوری عطا الثبیتی، ڈاکٹر فیصل الفاضل، ڈاکٹر لطیفہ الشعلان اور ڈاکٹر لطیفہ العبد الکریم نے سفارش کی تھی کہ اوقات نماز کے دوران تجارتی ادارے بند کرنے کی پابندی اٹھالی جائے جب کہ جمعے کو اس سے مستثنیٰ رکھا جائے۔

ارکان شوری کاموقف تھا کہ تجارتی ادارے عوام کی خدمت کرتے ہیں اور دیگر سرکاری و نجی اداروں کی طرح ان کا کام روزگار کا حصول ہے جس طرح سرکاری اور نجی ادارے اوقات نماز کے دوران بند نہیں ہوتے۔ اسی طرح تجارتی ادارے بھی کھلے رہنے چائیں۔

0Shares

Comments are closed.