چیف الیکشن کمشنر اور ممبران کی تقرری کا مستقل حل نکالنےکا فیصلہ

فوٹو : فائل

اسلام آباد(ویب ڈیسک)حکومت نے چیف الیکشن کمشنر اور ممبران کی تقرری کا تنازع مستقل بنیادوں پر حل کرنے کا فیصلہ کرلیا۔

اس حوالے سے پارلیمانی امور کے ذرائع کا کہنا ہے کہ وفاقی حکومت پارلیمانی کمیٹی برائے چیف الیکشن کمشنر اور ممبران تعیناتی کے رولز کو تبدیل کرے گی.

پارلیمانی کمیٹی میں چیف یا ممبران کی تعیناتی کیلیے رولز میں دوتہائی کی جگہ سادہ اکثریت کا لفظ ڈالا جائے گا، موجودہ رولز میں دوتہائی کی شرط کی وجہ سے چیف الیکشن کمشنر اور ممبران کی تعیناتی تاحال نہیں ہوسکی.

حکومت کا موقف ہے کہ پارلیمانی کمیٹی کے موجودہ رولز غیر آئینی ہیں،ججز تعیناتی سمیت دیگر کمیٹیوں میں دوتہائی کی شرط نہیں ہے۔

ذرائع کے مطابق پارلیمانی کمیٹی کے رولز موجودہ تنازعہ کو حل کرنے کے بعد تبدیل کئے جائیں گے۔الیکشن کمیشن کے ممبر سندھ اور ممبر بلوچستان کی تقرری 11 ماہ سے نہیں ہوسکی ہے.

دونوں ممبران 26 جنوری کو ریٹائر ہوگئے تھے، تب سے حکومت اور اپوزیشن میں ڈیڈلاک ختم ہونے کا نام نہیں لے رہا حکومت پہلے ہی عندیہ دے چکی ہے کہ تقرر کا کوئی ایسا حل چاہتے ہیں تاکہ آئندہ ایسے تعطل نہ آئے.

Leave A Reply

Your email address will not be published.