آرڈیننس کے ذریعے نیب کو تاجر برادری سے علیحدہ کر دیا، عمران خان

اسلام آباد(ویب ڈیسک)وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے تاجروں کو مبارک باد دیتا ہوں ‘آرڈیننس کے ذریعے نیب کو تاجر برادری سے علیحدہ کر دیا ہے، نیب کی مداخلت ملک میں تاجر برادری کا ایک بڑا مسئلہ تھا.

عمران خان نے پاکستان اسٹاک ایکسچینج کی تقسیم انعامات کی تقریب سے خطاب کر رہے تھے، انھوں نے کہا تاجر برادری وسائل پیدا کرتی ہے، وہ قوم آگے نہیں بڑھ سکتی جہاں تجارتی طبقہ مسائل سے دوچار رہے.

وزیر اعظم نے کہا ‘نیب کو صرف پبلک آفس ہولڈرز کی اسکروٹنی کرنی چاہیے، نیب تاجر برادری کے لیے بہت بڑی رکاوٹ تھی، انہوں نے کہا کہ 2023 تک عوام کو یہ بھولنے  نہیں دوں گا کہ ہمیں کس حالت میں پاکستان ملا تھا.

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ 30 ہزار ارب روپے کا قرضہ ملا تھا، ہم اپنی کارکردگی بھی بتائیں گے اور یہ بھی بتاؤں گا کہ کس طرح کا پاکستان اور ادارے ملے تھے۔ ہماری معاشی ٹیم ہر وقت موجود ہے اور کوشش کروں گا کہ دو، تین مہینے میں ایک مرتبہ تاجر برادری سے ضرور ملوں۔

انھوں نے کہا تاجر برادری کی پریشانی دور کرنا پاکستان کی ضرورت ہے، سرمایہ کار پیسہ بنائیں تاکہ دیگر سرمایہ کار ملک میں آئیں، عمران خان نے کہا کہ فلاحی ریاست کا تصور لے کر چین نے 30 برس میں 70 کروڑ لوگوں کو غربت کی لکیر سے نکلا۔

وزیراعظم سے ممتاز کاروباری شخصیات اور تاجر برادری کے وفد نے ملاقات کی جن میں ایس ایم منیر، سراج قاسم تیلی، آغا شہباب، عارف حبیب اور دیگر شامل تھے۔

کاروباری افراد سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ کاروباری طبقہ ملک کی معاشی ترقی میں اہم ستون کا درجہ رکھتا ہے، جبکہ حقیقی ترقی نجی شعبے کی طرف سے سرمایہ کاری سے ہی ممکن ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کا کام کاروباری طبقے کو سازگار ماحول فراہم کرنا ہے، حکومت کاروبار میں آسانیاں پیدا کرنے پر پوری توجہ دے رہی ہے اور کاروباری آسانیوں کے حوالے سے پاکستان دنیا میں 28 درجے اوپر چلا گیا ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ معیشت مستحکم ہو رہی ہے، معاشی اشاریے بہتری کی طرف جارہے ہیں، عالمی ادارے بشمول موڈیز نے پاکستان کی معاشی صورتحال کو مستحکم قرار دیا.

Leave A Reply

Your email address will not be published.