اقوام متحدہ کنونشن میں پاکستان کی کرپشن کے خلاف قرارداد منظور

فوٹو : اے پی پی

اسلام آباد(ویب ڈیسک)اقوام متحدہ کنونشن ‘کانفرنس آف دی اسٹیٹ پارٹیز’ میں بدعنوانی کی روک تھام اور اس سے نمٹنے میں پارلیمنٹ کے مضبوط کردار سے متعلق پاکستان کی قرارداد متفقہ طور پر منظور کرلی گئی۔

اس حوالے سے جاری اعلامیہ کے مطابق قرار داد سی او ایس پی کے 8واں اجلاس میں پیش ہوئی اور مذکورہ اجلاس ابوظہبی میں 16 سے 20 دسمبر تک جاری رہا۔

ترجمان دفتر خارجہ کے ایک بیان میں کہا گیا کہ قرارداد کا متفقہ طور منظور ہونا بدعنوانی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی بین الاقوامی برادری میں مثبت کردار کی عکاسی ہے۔

قرارداد میں زور دیا گیا کہ تمام اراکین اپنے اپنے ملک میں پارلیمانی اداروں کو مستحکم بنائیں گے اور موثر نگرانی کو یقینی بنانے کے ساتھ پارلیمانی اداروں کے مابین تبادلوں کو بڑھانے کے لیے اچھے طریقے اپنائیں۔

اس سلسلے میں اقوام متحدہ کے دفتر برائے منشیات اور جرائم (یو این او ڈی سی) کو یہ حکم دیا گیا کہ بدعنوانی کے خلاف جنگ میں پارلیمنٹس کے کردارکو مضبوط بنانے کے لیے انٹرا پارلیمنٹری یونین کے اشتراک سے ایک موضوعاتی مکالمہ کا اہتمام کرے۔

اعلامیہ کے مطابق بدعنوانی کے خاتمے کے لیے پاکستان کا اقدام وزیر اعظم عمران خان کے وژن کے مطابق ہے۔ یو این او ڈی سی بدعنوانی کے خلاف جنگ میں پارلیمنٹس کے مثبت کردار سے متعلق ایک مجموعہ بھی تیار کرے گی۔

ویانا میں وزارت خارجہ اور پاکستان مشن نے قرارداد پر اتفاق رائے حاصل کرنے کے لیے مشاورت کے عمل کو آگے بڑھایا، جغرافیائی خطوں کے ترقی پذیر اور ترقی یافتہ ممالک نے مذکورہ قرارداد کی بحالی کے لیے تعاون کیا.

ساتھ دینے والے ممالک میں میں آذربائیجان، برازیل، کینیڈا، چین، انڈونیشیا، مراکش، نائیجیریا، پیرو، فلپائن، روس، سنگاپور اور سوئٹزرلینڈ شامل ہیں۔

0Shares

Comments are closed.