سینیٹ میں کشمیریوں سے یکجہتی کی قرارداد متفقہ منظور

فوٹو: فائل

اسلام آباد( زمینی حقائق ڈاٹ کام )سینیٹ میں بھارتی مظالم کی مذمت اور کشمیریوں سے یکجہتی کی قرارداد متفقہ منظور کرلی گئی، کشمیریوں کے عزم و ہمت کو خراج تحسین پیش کیا گیا۔

چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کی زیر صدارت کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیلئے سینٹ کا خصوصی اجلاس ہوا، جس میں اراکین سینیٹ نے کشمیریوں سے یکجہتی کا اظہار کرنے کے ساتھ بھارتی مظالم کی شدید مذمت کی۔

کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیلئے قراردادوزیر مملکت علی محمد خان نے پیش کی جسے متفقہ طور پر منظور کیا گیا،قرار داد میں کہا گیا ہے کہ سینٹ آف پاکستان کشمیری عوام کی بھارتی مظالم کے خلاف بہادری و عزم کو سلام پیش کرتا ہے۔

ایوان بھارت کی جانب سے 5 اگست 2019 کے یکطرفی اقدامات اور وادی کے اندر انسانی حقوق کی پامالیوں کی شدید مذمت کرتا ہے، بھارت مظالم سے کشمیریوں کے جذبہ حریت و آزادی کو دبا نہیں سکتا۔

قرارداد میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ بھارتی حکومت کشمیر میں ماورائے قانون و عدالت، جعلی مقابلوں اور نام نہاد سرچ آپریشن کے نام پر کشمیریوں کے قتل عام کو روکے۔

قرارداد میں کشمیر میں آزادی کا تناسب بدلنے کیلئے کئے گئے فیصلوں کو واپس لینے، کشمیر میں حالات معمول پر لانے اور کشمیری سیاسی قیدیوں کی رہائی کا بھی مطالبہ کیا گیا، جب کہ عالمی برادری کو کشمیریوں کی نسل کشی کا نوٹس لینے کی اپیل کی گئی ہے۔

سینیٹ آف پاکستان نے کشمیرمیں جاری بھارتی مظالم کی شدید مذمت کی اور قرار دیا کہ پوری پاکستانی قوم کشمیر کے معاملے پر متحد ہے، ایوان نے کشمیر کی صورتحال پر اقوام متحدہ سمیت عالمی اداروں، او آئی سی کی خاموشی کو افسوسناک و شرمناک ہے۔

سینیٹ نے تمام عالمی فورمز پر مسئلہ کشمیر کا مقدمہ موثر انداز میں اجاگر کرنے کا اعادہ کیا اور کشمیری عوام کو یہ پیغام دیا کہ پاکستانی قوم کشمیری بہن بھائیوں کے ساتھ ہے اور کشمیر کی آزادی تک ساتھ رہیں گے۔

0Shares

Comments are closed.