ماضی میں حکمرانوں کی ترجیح عوام نہیں ڈالر تھے، عمران خان

دفتر خارجہ میں ایک تقریب سے خطاب

ئفوٹو: وزیراعظم آفس

اسلام آباد(زمینی حقائق ڈاٹ کام) وزیراعظم نے کہا ہے بدقسمتی سے ماضی میں حکمرانوں کی ترجیح عوام نہیں ڈالر تھے، عمران خان کا کہناہے کہ پاکستان نے اپنے لوگوں کے مفاد کے خلاف ہی خارجہ پالیسی بنائی۔

دفتر خارجہ میں ایک تقریب سے خطاب میں وزیراعظم عمران خان نے کامیاب او آئی سی کانفرنس کے انعقاد پر دفتر خارجہ کے حکام کی تعریف کی اور کہا کہ آپ نے تھوڑے سے وقت میں اتنا اچھا کام کیاہے میں توآج آپ کی تحسین کیلئے آیا ہوں۔

وزیراعظم نے کہا ماضی میں بعض فیصلوں کی مشاورت میں شامل ہوا ، بدقسمتی سے ہماری اس پالیسی کا مرکز ڈالر تھے ، جب مادہ پرستی پر فیصلے کریں گے تو اس پر وقتی فائد ہ کے بعد نقصانات ہوتے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ ماضی میں پاکستان کے حالات خراب ہونے میں اپنا ہی قصور تھا، دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کی عوام کا نہیں سوچا گیا۔

عمران خان نے کہا ملکی حالات میں آنے والے اتار کے ہم خود ہی قصور وار ہیں، کسی اور پر الزام نہیں لگانا چایئے،ہم نے اپنے آپ کو ہی استعمال ہونے دیا، امداد کے لیے ہم نے اپنی ملک کی ساکھ کو قربان کیا۔

http://

وزیراعظم نے کہا صرف پیسے کے لیے اپنے لوگوں کے مفاد کے خلاف ہی خارجہ پالیسی بنائی گئی، انھوں نے کہا کہآئندہ او آئی سی کا اجلاس کا اس سے بھی بہتر انداز میں کیا جائے گا۔

عمران خان کا او آئی سی وزرائے خارجہ کونسل کے اجلاس سے متعلق کہنا تھا کہ کانفرنس سے جو پاکستان کا مقصد تھا وہ پورا ہوا ہے، ساری دنیا پاکستان کے مؤقف کی تائید کر رہی ہے۔

انھوں نے کہا کہ پاکستان تو اگست سے یہ کہہ رہاہے کہ طالبان پسند ہیں یا نہیں ہمیں افغان عوام کا سوچنا ہوگا۔ آج سب ہمارے ساتھ کھڑے ہیں، ہمارے مؤقف کی تائید کرتے ہیں۔

0Shares

Comments are closed.