شہباز شریف کو وزیراعظم بن کر ملک چلانے کا مینڈیٹ نہیں دیں گے، بلاول بھٹو

فوٹو: فائل 

اوکاڑہ( ویب ڈیسک) چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے واضح کیا ہے کہ شہباز شریف کو وزیراعظم بن کر ملک چلانے کا مینڈیٹ نہیں دیں گے، بلاول بھٹو نے کہا وہ صرف انتخابی اصلاحات کریں گے.

نجی ٹی وی ہم نیوز کو انٹرویو میں بلاول بھٹو زرداری نے اپوزیشن میں موجود ڈیڈ لاک کا واضح اشارہ دیتے ہوئے کہا کہ ہم شہباز شریف کو اجازت نہیں دیں گے کہ وہ معاشی اور خارجہ پالیسی بنائیں۔

انھوں نے کہا کہ ن لیگ اپوزیشن کی اکثریتی پارٹی ہے، وزارت عظمیٰ پر شہبازشریف کا حق ہے، لیکن انہیں معاشی اور خارجہ پالیسی بنانے کی اجازت نہیں دیں گے، شہبازشریف کو صرف انتخابی اصلاحات کیلئے قائد ایوان منتخب کیا جائےگا۔

انہوں نے ایک بار پھر کہا کہ عمران خان کو چاہیے خود بخود مستعفی ہوجائے اوراسمبلی توڑ دے ،مگر اس میں ہمت حوصلہ نہیں ہے، وہ جانتا ہے عوام میں جائے گا تواس کو شکست ہوگی.

بلاول بھٹو زرداری نے کہا عمران خان کا کوئی مستقبل نہیں ہے، مجھے نہیں لگتا کہ عمران خان میں وہ شرم اور بہادری ہے، ہمارے پاس آئینی آپشن ہے، ہم جمہوری آپشن عدم اعتماد جلد استعمال کریں گے، ہمارے نمبرز پورے ہیں.

ان کا کہنا تھا کہ ہم نمبرز پورے کرنے پر مسلسل کام کررہے ہیں ہمارا کام جاری ہے، ماضی کی طرح ہم عمران خان کو اس کے اپنے ہی حلقے سے ہروائیں گے۔ ہمارا مقصد صاف شفاف الیکشن ہے.

ہمارا مقصد صرف حکومت نہیں ہے، ہم سب کا مقصد شفاف الیکشن ہے۔ انہوں نے کہا کہ ن لیگ اپوزیشن کی اکثریتی پارٹی ہے، وزارت عظمیٰ پر شہباز شریف کا حق ہے، لیکن شہباز شریف کو وزیراعظم بننے پر ملک چلانے کے لیے مینڈیٹ نہیں دیں گے.

شہبازشریف کو صرف انتخابی اصلاحات کیلئے قائد ایوان منتخب کیا جائے گا۔اس سے قبل چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نےاوکاڑہ رینالہ خورد میں عوامی مارچ کے شرکاء سے خطاب کیا.

چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو نے وزیراعظم کو3دن کی مہلت دے دی،استعفیٰ دیں اور چلے جائیں، ورنہ ہم آرہے ہیں اور کٹھ پتلی کو گھر بھیج کر صاف و شفاف انتخابات کرائیں گے اور عوامی حکومت لائیں گے۔

عوامی مارچ کے دوران اوکاڑہ میں شرکا سے خطاب کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ عوامی مارچ میں لوگ ہمارا ساتھ دے رہے ہیں، جہاں سے گزر رہے ہیں لوگ ہمارا استقبال کر رہے ہیں، ہمارے قافلے میں کارکن اور شہروں کے لوگ بھی شامل ہو رہے ہیں۔

چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا وزیراعظم کو مستعفی ہونے کیلئے جو مہلت دی ہوئی ہے وہ اب صرف3دن باقی ہیں،، استعفیٰ نہ دینے کی صورت میں عمران خان اسمبلی توڑیں اور مقابلہ کریں، ورنہ ہم اسلام آباد آرہے ہیں۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ایک ہفتے سے ہم سڑکوں پر ہیں، پورا پاکستان ہمارے قافلے کا حصہ بن رہا ہے، ہم سلیکٹڈ اور نااہل وزیر اعظم کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں، ہمارا احتجاج دہشت گردی، مہنگائی، بیروزگاری اور حکومت کے آمرانہ طریقہ کار کے خلاف ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان نے ہر وعدے پر یو ٹرن لیا اور یو ٹرن لینا جھوٹوں اور منافقوں کی نشانی ہوتی ہے لیڈر کی نہیں، عوام کا عمران خان سے اعتماد اٹھ چکا ہے، اب پارلیمنٹ میں بھی تحریک عدم اعتماد لانی چاہیے ۔

بلاول نے کہا وزیراعظم کی وجہ سے ملک میں دہشت گردی کی آگ پھر بھڑک اٹھی ہے، بلوچستان اور پشاور میں بم دھماکے ہوئے ہیں، حکومتی پالیسیوں کی وجہ سے معاشی بحران پیدا ہوا، آج کسان مہنگائی کے سونامی میں ڈوب رہا ہے۔

انھوں نے دعویٰ کیا کہ ہم نے پرویز مشرف کو بھگا کر بینظیر بھٹو شہید کا مشن بحال کیا، ہم نے این ایف سی کے تحت صوبوں کو ان کا حق دلایا، آصف زرداری کے سی پیک کی وجہ سے یہ پنجاب میں بڑے منصوبے بنا سکے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی نے یہ بھی کہا کہ آج جو پاکستانی یورپ اورمشرق وسطیٰ میں کام کررہے ہیں وہ قائد عوام کی وجہ سے کررہے ہیں،انہوں نے کہا کہ قائد عوام نے کسانوں کو ان کا حق دیا، زمین کا مالک بنایا جبکہ حکومت نے زراعت کے شعبے کے لیے کچھ نہیں کیا۔

0Shares

Comments are closed.