یوٹیلیٹی سٹورز پر گھی اور کوکنگ آئل مہنگا کرنے کا نوٹیفکیشن منسوخ

اسلام آباد( زمینی حقائق ڈاٹ کام)وزیراعظم کی طرف سے پٹرول کی قیمتوں میں اضافہ کرنے کے اعلان کے بعد مہنگائی کا ایک اور طوفان آگیا، یوٹیلیٹی اسٹورز پر برانڈڈ گھی کی فی کلو قیمت میں 38 روپے اور تیل کے فی کلو پیکٹ پر 33 روپے کا اضافہ کردیا گیا۔

اس حوالے سے جاری ہونے والے نوٹیفکیشن کے مطابق برانڈڈ گھی کی فی کلو قیمت میں 38 روپے تک اضافہ کیا گیا ہے، جس کے بعد 354 روپے والا فی کلوبرانڈڈ گھی کا پیکٹ 392 روپے میں دستیاب ہوگا۔

گھی ہی نہیں بلکہ اسی طرح تیل کے فی کلو پیکٹ کی قیمت 33 روپے بڑھا ئی گئی ہے، اوراب برانڈڈ آئل کی فی کلوقیمت 355 سے بڑھا کر388 کر دی گئی ہے۔

نوٹیفکیشن میں کہا گیاہے کہ 5 کلو والے برانڈڈ گھی کے ڈبے کی قیمت میں187 روپے تک اضافہ کیا ہے، اور پانچ کلو والے گھی کی قیمت 1795 سے بڑھا کر1982 روپے مقرر کردی گئی۔

واضح رہے کہ حکومت نے صرف 17 روز قبل ہی 15 اکتوبر کو مختلف برانڈز کے گھی کی قیمتوں میں 40 سے 1090 روپے تک کا اضافہ کیا تھا، اور یوٹیلیٹی اسٹورز پر ملنے والے ڈالڈا گھی کی فی کلو قیمت میں 109 روپے اور 10 لیٹر کین میں 1090 روپے بڑھائے گئے تھے۔

ڈالڈا گھی کا 10 لیٹر کا کین 2500 روپے سے بڑھ کر 3590 روپے کا ہوگیا تھا، میزان گھی کے 10 لیٹر ٹن کی قیمت میں 475 روپے اضافے کے بعد میزان گھی کے 10 لیٹر ٹن کی قیمت 2885 سے بڑھا کر 3360 روپے کی گئی تھی۔

اسی طرح یوٹیلیٹی اسٹورز پر 5 لیٹر پلانٹا کوکنگ آئل کی قیمت میں 463 روپے کا اضافہ جب کہ من پسند کوکنگ آئل کی قیمت 465 روپے تک بڑھا دی گئی تھی، متذکرہ اضافہ کے بعد من پسند 5 لیٹر کوکنگ آئل ٹن کی قیمت 1245 سے بڑھ کر 1710 روپے کی گئی تھی۔

میڈیا پر رپورٹس کے بعد یوٹیلیٹی اسٹورز نے مختلف برانڈز کے گھی اور کوکنگ آئل مہنگا کرنے کا نوٹیفکیشن واپس لے لیا گیا ہے بتایا گیا ہے کہ قیمتیں وہی پرانی ہی برقرار رہیں گی.

ترجمان یوٹیلیٹی اسٹورز کارپوریشن کے مطابق گھی اورخوردنی تیل کی قیمتوں میں اضافے کا نوٹیفکیشن منسوخ کردیاہے عوام کی سہولت کے لیے گھی سمیت دیگر سبسڈائزڈ اشیاء کی قیمتوں میں کوئی اضافہ نہیں ہوا۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ گھی اور خوردنی تیل کی قیمتوں پر مینوفیکچررز کی جانب سے قیمتیں بڑھانے کے بعد نظرثانی کی گئی قبل ازیں یوٹیلیٹی اسٹورز پر اور مختلف برانڈز کے کوکنگ آئل فی لیٹر مہنگا کئے جانے کا نوٹیفکیشن جاری کیا گیا تھا

0Shares

Comments are closed.