عبدالرزاق نے ٹاک شو میں خاتون کرکٹر ندا ڈار کو کیا کہا؟ ویڈیو وائرل

اسلام آباد(زمینی حقائق ڈاٹ کام)سابق آل راونڈر عبدالرزاق کا پاکستان ویمن کرکٹ ٹیم کی آل راؤنڈر ندا ڈار سے متعلق مزاق میں کہا گیا جملہ سوشل میڈیا پر چلنے کے بعد وائرل ہونا شروع ہو گیا.

عبدالرزاق اور ندا ڈار نے نجی ٹی وی چینل کے ٹاک شو میں گزشتہ ماہ جون میں شرکت کی شاید اکثریت نے یہ پروگرام دیکھا بھی نہیں تھا لیکن سوشل میڈیا پر کلپ آتے ہی ہٹ ہو گیا.

اس ویڈیو کلپ اب سوشل میڈیا پر وائر ل ہورہا ہے جس کے بعد لوگوں نے اس پر حق اور مخالفت میں تبصرے کئے ہیں، عبدالرزاق کے جملے کے بعد ٹاک شو کے دیگر شرکاء نے بھی ندا ڈار کے بالوں پر طنز کیا.

میزبان نعمان اعجاز نے ندا ڈار سے پوچھا کہ اگر وہ کرکٹر نہ ہوتیں تو وہ کس شعبے کا انتخاب کرتیں جس پر ندا ڈار نے کہا کہ وہ ایک پروفیشنل ایتھیلیٹ بن جاتیں۔

https://twitter.com/emclub77/status/1415197775998951428?s=19

ایک اور سوال پر ندا ڈار نے کہا کہ جن کالجز اور اسکولز کے پاس گراؤنڈز ہوتے ہیں ان کی یہی کوشش ہوتی ہے کہ لڑکیوں کو کرکٹ کھلائیں اور لڑکیاں مختلف گاؤں سے کرکٹ کو ہی اپناکیریئر بنانے کے لیے آتی ہیں۔

شریک میزبان نے کہا کہ ’اور جب شادی ہوتی ہے تو پھر کرکٹ چھوڑ جاتی ہیں’ اس پرخاتون کرکٹر نے کہا کہ ان کی یہی کوشش ہوتی ہے کہ جتنا کرکٹ کھیل سکتی ہیں کھیل لیں شادی کے بعد کچھ پتا نہیں ہوتا۔

ندا ڈار کی اس بات پر عبدالرزاق نے کہا کہ خواتین کرکٹرز کی شادی نہیں ہوتی، ان کی فیلڈ ایسی ہے، جب یہ کرکٹرز بن جاتی ہیں تو وہ پھر چاہتی ہیں کہ مردوں کی ٹیم کے لیول تک آجائیں.

عبدالرزاق نے کہا کہ وہ ثابت کرنا چاہتی ہیں کہ صرف مرد نہیں وہ بھی یہ سب کچھ کرسکتی ہیں، انھوں ازرائے مزاق کہا کہ آپ ندا ڈار سے ہاتھ ملا کر دیکھ لیں یہ اب لڑکی تو نہیں لگتیں۔

جواب میں ندا ڈار نے کہا کہ ہمارا پروفیشن ہی ایسا ہے کہ ہمیں جِم جانا پڑتا ہے، ہمیں فِٹ رہنا پڑتا ہے ،اسی دوران عبدالرزاق نے کہا کہ ‘آپ ان کے بال دیکھیں۔

اس کے بعد شو میں یہ سوال بھی سامنے آیا کہ کیا بالوں کے ساتھ کرکٹ نہیں کھیلی جاسکتی ،میزبان نے یہ بھی پوچھ لیا کہ کیا تھری پیس پہن کر کرکٹ کھیلی جا سکتی ہے؟

0Shares

Comments are closed.