ثاقب نثار سے منسوب آڈیو شریف خاندان نے جاری کروائی، اعتزاز احسن

اسلام آباد(ویب ڈیسک) پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما و قانون دان اعتزاز احسن نے سابق چیف جسٹس آف پاکستان ثاقب نثار کی آڈیو ٹیپ کو سازش قرار دے دیا ہے۔

نجی ٹی وی چینل سما ںیوز کو انٹرویو میں اعتزاز احسن نے دعویٰ کیا کہ سابق چیف جسٹس پاکستان ثاقب نثار سے منسوب آڈیو شریف خاندان نے جاری کروائی، اعتزاز احسن نے کہا کہ یہ ایک چال تھی جسے ایکسپوز کرنا ایک بڑا کمال ہے۔

انھوں نے کہا کہ اس قسم کا فراڈ اور جعلسازی میری سوچ سے بھی آگے ہے ثاقب نثار کے الفاظ جن کا شریف خاندان سے کوئی تعلق نہیں ہے اور جس میں جُرم کا کوئی شائبہ بھی نہیں ہے.

اعتزاز احسن نے کہا کہ یہ سب تقریروں کے ریکارڈ سے چلایا گیا وہ الفاظ نکال نکال کر انہوں نے پہلے لکھ کر محنت کی ہے، عدالتیں ان کا لحاظ کر جاتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ جب ایسی چیز میں ٹیمپرنگ آ جائے تو پھر جج بھی سہارا نہیں دے سکیں گے اگر ان کا ثاقب نثار والا یہ کھیل چل جاتا تو بڑی کاری ضرب لگتی۔

سابق سینیٹر و ماہر قانون دان نے کہا کہ ایسا لگتا ہے کہ پہلے ان لوگوں نے ثاقب نثار کی ٹیپ بنا کر رانا شمیم کو سنائی اور پھر ان سے بیان لکھوایا،ان کو کہا گیا کہ آپ نے یہ سب کچھ کرنا ہے۔

اعتزاز احسن نے سابق چیف جج گلگت بلتستان رانا شمیم سے متعلق بات کرتے ہوئے کہا کہ آج رانا شمیم بھی سوچ رہے ہوں گے کہ وہ کہاں پھنس گئے ہیں۔ یہ سب کچھ پہلے لکھ کر پلان کیا گیا تھا کہ کون کون سے الفاظ چننے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ عدالتوں پر حملوں کی بھرمار ہو گئی ہے،اس سے قبل ایک بیان میں اعتزاز احسن نے یہ پوائنٹ بھی اٹھایا تھا کہ دیکھنا یہ ہے کہ اس آڈیو کا فائدہ اٹھانے کی کوشش کون کرتا ہے.

واضح رہے کہ چیف جسٹس (ر) ثاقب نثار سے منسوب ایک آڈیو کلپ سامنے آیا ہے جس میں وہ مبینہ طور پر کہہ رہے ہیں کہ نواز شریف اور مریم نواز کو الیکشن تک اندر ہی رکھا جائے.

دوسری طرف سابق چیف جسٹس (ر) ثاقب نثار بھی اس ویڈیو سے لا تعلقی کا اعلان کرتے ہوئے اسے ٹمپرنگ قرار دے چکے ہیں جبکہ مسلم لیگ ن کے رہنما شاہد خاقان عباسی نے نواز شریف کی بریت کا مطالبہ کیا ہے.

مبینہ آڈیو کلپ میں وہ مبینہ طور پر تسلیم کر رہے ہیں کہ مریم نواز کو بھی سزا دینی ہو گی اگرچہ مریم نواز کے خلاف کوئی کیس نہیں ہے۔

0Shares

Comments are closed.