آنٹی مارچ

1748
0 0
Read Time:1 Minute, 40 Second

تحــقیر کرو تم عـــورت کی’ پھر ناچ کے بولو آزادی
چــــادر کو تم پامال کرو ‘ دیــــــوار پہ لکّھــــو آزادی

تم عزّت ،عَصمت،غیرت کا’ مفہوم بدل دو شہرت سے
سڑکوں پر جاکر راج کرو اور زور سے چیخو آزادی

تم آوارہ بدچَـــلنی کا تعـویــــــذ پہَـن لـــو گـــــردن میں
آواز ے کَسیں لونڈے تم پر ‘ تو شـــور مچاؤ ” آزادی”

گھر کے ہر کام سے بیزاری دفتر سے تم کو رغبت ہے
گھــر زندان لگے تم کو اور جـــاب کو سمجھــو آزادی

دوچــــــــار کتابیں مذہب کی’ اب پڑھ لینا تم آنٹی جی!
پھـــــرجـــــا کر اپنی پلٹن کو ‘ حق بات بتانا آنٹی جی!

مغـــرب کے جھوٹے برتن میں’ ہے کھانا پینا راس تمھیں
کھوٹے سکّوں جیسے نعرے’ لگتے ہیں کیوں خاص تمھیں

دس بارہ وَلگر نعـــــــروں سے’ تقدیـــر بدل سکتی ہوتم ؟
دل کے خانے سے شوہر کی ‘ تصویر بدل سکتی ہو تم ؟

اونچی ہِیـــل کی سَـــینڈل سے’ کیا” کے ۔ٹو ” سَر کر پاؤ گی؟
چھوڑ زمین ۔۔۔ گَر اُڑنا ہے تو منہہ کے بَل گِـر جاؤ گی

کس بھول میں ہو تم آنٹی جی! کس خواب محل میں رہتی ہو؟
کیوں عزۤت تم کو راس نہیں’ جـو ایســـے “جـــملے”کہتی ہو؟

خود اپنی عصــمت پَیروں میں’ تم روند رہی ہو غیروں میں
ذلّت آمیز فســـــــانوں میں جیســے ہو قحــــبہ خــــــانوں میں

اپنی عزّت کرنا سیــــکھو ‘ پھــــــــــر نکلو تم بازاروں میں
ورنہ چَھپتی رہ جاو گی ‘ شــــــام کے سَستے اخباروں میں

( سِــدرہ سَـحَــرؔ عمران— Sidra Sahar عمران) .

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %
11Shares

Average Rating

5 Star
0%
4 Star
0%
3 Star
0%
2 Star
0%
1 Star
0%

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Translate »