عمران نیازی کے سی پیک منصوبوں کےفرانزک آڈٹ پر چینی ناراض ہیں، وزیراعظم

اسلام آباد(زمینی حقائق ڈاٹ کام) وزیر اعظم شہباز شریف نے انکشاف کیا ہے کہ عمران نیازی کے سی پیک منصوبوں کے فرانزک آڈٹ پر چینی ناراض ہیں، وزیراعظم نے کہا کہ عمران نیاز ی کے سی پیک منصوبوں کے فرانزک آڈٹ کرنے سے سی پیک کا برا حال ہے اور چینی دوست ناراض ہیں۔

وزیراعظم شہبازشریف نے سی پی این ای کے عہدیداروں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اس وقت ملکی تاریخ کے بد ترین مالیاتی خسارے کا شکار ہے، عمران نیازی نے سی پیک کا برا حال کیا ہے۔

وزیراعظم اس بات پر بھی ناخوش دکھائی دیئے کہ عمران خان نے سی پیک منصوبوں کا فرانزک آڈٹ کروایا ہے ، جس سے چینی دوست سخت ناراض ہیں، مارچ میں تیل کی قیمتیں منجمد کرکے عمران خان نے اگلی حکومت کے لئے بارودی سرنگ بچھائی۔

سعودی عرب اور یو اے ای سے مدد کی درخواست کر دی ، ابھی مدد ملی نہیں

انھوں نے کہااب پرندہ پنجرے میں پھڑپھڑا رہا ہے، ہم عوام کو ریلیف دینا چاہتے ہیں مگر عالمی سطح پر تیل کی بڑھتی قیمتیں ہمارے پاؤں کی زنجیر ہیں، سعودی عرب اور یو اے ای سے مدد کی درخواست کر دی ، ابھی مدد ملی نہیں، وزیراعظم نے کہا یہ فیصلہ اب انہوں نے کرنا ہے۔

ملاقات میں سی پی این ای نے پیکا آرڈی نینس کا معاملا اٹھایا جس پر وزیراعظم شہبازریف کا کہنا تھا کہ پیکا آرڈیننس پر حکومت کی اجازت کے بغیر سپریم کورٹ نظر ثانی کی درخواست دائر کرنے والے ایف آئی اے کے افسران کے خلاف کارروائی ہوگی۔

وزیراعظم شہباز شریف نے انھیں بتایا کہ وزیرقانون اعظم رفیق تارڑ کو ہدایت کی کہ پیکا آرڈییننس پر فوری نظرثانی کی جائے، آزادی صحافت کے منافی شقیں فوری ختم کی جائیں۔

انھوں نے وفد کو یہ بھی بتایا کہ بیورو کریٹس سے تفصیلی میٹینگ ہوئی ہے، نیب کی موجودگی میں بیورو کریٹس شدید دباؤ کا شکار ہیں، اور ان کا کہنا ہے کہ نیب کی موجودگی میں کام نہیں کر سکتے، صحافی سمیع ابراہیم کو جاری ہونے والے نوٹس کا بھی نوٹس لے لیا ہے۔

میں’بیگرز کانٹ بی چوزر ‘ والی بات پر آج بھی قائم ہوں

وزیراعظم نے کہا پاکستان اس وقت ملکی تاریخ کے بد ترین مالیاتی خسارے کا شکار ہے ، کشمیر کے حوالے سے کہا کہ کشمیر پر ہمارا مؤقف وہی ہے جو کشمیریوں کا ہے، کشمیر کے معاملے پر اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عمل ہونا چاہیے۔

ان کا کہنا تھا کشمیر پر اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عمل ہونے سے پاکستان اور بھارت اچھے ہمسایوں کی طرح رہ سکیں گے، پاکستان کی معاشی خوشحالی اور مضبوطی کشمیریوں کو ہماری طرف راغب کرے گی، ہم مضبوط ہوں گے تو ہمیں کوئی ڈکٹیٹ نہیں کرسکتا۔

شہبازشریف نے کہا کہا میں’بیگرز کانٹ بی چوزر ‘ والی بات پر میں آج بھی قائم ہوں، جب تک ہم مضبوط نہیں ہوں گے مسئلہ کشمیر حل نہیں ہو سکتا۔

0Shares

Comments are closed.