وزیراعظم کو 4 کپتان بھی ڈیپارٹمنٹل کرکٹ کی بحالی پر قائل نہ کر سکے

کھیل

اسلام آباد(زمینی حقائق ڈاٹ کام)بڑے کپتان وزیراعظم عمران خان کو 4 کپتان مل کر بھی
ڈپارٹمنٹل کرکٹ کی بحالی کی تجویز پر قائل نہ کر سکے، عمران خان نے کہا انتظار کریں تبدیلی کے نتائج جلد نظر آنا شروع ہوں گے.

وزیراعظم نے ملاقات کرنے والے تین اہم قومی کرکٹرز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہےکہ جب نظام بدلتا ہے تو ایک دم نتائج نہیں آتے، نئے ڈومیسٹک ڈھانچے سے حقیقی ٹیلنٹ اوپر آئےگانتائج فوری سامنے نہیں آتے۔

وزیراعظم سے قومی کرکٹ ٹیم کے سابق و موجودہ کپتانوں وسیم اکرم، مصباح الحق اور محمدحفیظ، ٹیسٹ ٹیم کے کپتان اظہرعلی نے ملاقات کی جس میں جبکہ چیئرمین پی سی بی احسان مانی اور چیف ایگزیکٹو وسیم خان بھی موجود تھے۔

ملاقات کے حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ سابق کرکٹرز نے ڈومیسٹک کرکٹ میں ڈپارٹمنٹس کی بحالی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ڈپارٹمنٹل کرکٹ کے خاتمے سے مقامی کھلاڑی بے روزگار گئے ہیں۔

وزیراعظم کا ڈپارٹمنٹل کرکٹ کی بحالی کی تجویز مسترد کرتے ہوئے کہنا تھاکہ ریجنل کرکٹ سب سے بہترین ڈومیسٹک اسٹرکچر ہے، پرانا ڈومیسٹک نظام ختم ہونے سے پیدا ہونے والی مشکلات کا اندازہ ہے۔

عمران خان نے ایک بار پھر کہا کہ اگر کرکٹ ٹھیک کرنی ہے تو ریجن کرکٹ واحد حل ہے، جب نظام بدلتا ہے تو ایک دم نتائج نہیں آتے، نئے ڈومیسٹک ڈھانچے سے حقیقی ٹیلنٹ اوپر آئےگا۔

اس کے بعد پی سی بی اور پاکستان ٹیلی ویژن کے درمیان معاہدے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ مصباح الحق، محمد حفیظ اور اظہر علی کو بڑی مشکل سے سمجھایا ہے کہ نئے نظام سے تبدیلیاں نظر آئیں گی۔

یاد رہے اگست 2019 میں وفاقی کابینہ نے پی سی بی کے نئے آئین کی منظوری دی تھی جس کے بعد ڈپارٹمنٹل سسٹم ختم کردیا گیا اور ڈپارٹمنٹس کی جگہ اب صوبائی ٹیمیں ڈومیسٹک کرکٹ کا حصہ ہیں.

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان میں کرکٹ کا ٹیلنٹ موجود ہے لیکن اسے پالش کرنے کا نظام ٹھیک نہیں، خواہش ہے کہ اگلے ورلڈکپ میں پاکستان کا ٹیلنٹ سب سے بہتر نظر آئے۔

Shares

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *