جے یوآئی کے گل نصیب اور شجا ل الملک بھی پارٹی پالیسی سے نالاں

0
0 0
Read Time:1 Minute, 27 Second

فوٹو:فائل

پشاور: جے یو آئی ف کی قیادت پربلوچستان کے بعد خیبر پختون خوا سے بھی عدم اعتماد کی آوازیں اٹھنے لگیں ، سابق ایم این اے مولانا شجاع الملک اورمولانا گل نصیب نے مولانا شیرانی کی حمایت کردی۔

خیبر پختون خوا سے جمیعت علمائے اسلام میں مولانا محمد خان شیرانی کے حق میں آوازیں اٹھنا شروع ہوگئی ہیں اور سابق ایم این اے مولانا شجاع الملک اورمولانا گل نصیب نے مولانا شیرانی کے موقف کی حمایت کردی ہے۔

ایک تقریب سے خطاب میں سابق سینیٹر گل نصیب خان کا کہنا تھا کہ جمعیت میں اب ٹکٹ نظریئے،کردار ،صداقت کی بنیاد پر نہیں دیئے جاتے۔ ٹکٹ دینے کیلئے اب دوسرا پیمانہ بنا دیا گیا ہے۔جمعیت میں نظریاتی کارکنوں کو نظر انداز کیا جارہا ہے۔

سابق سینیٹر نے کہا کہ جے یو آئی ف میں اب پیسے والوں کو آگے کیا جارہا ہے۔ مولانا شیرانی پارٹی کے سینئر ترین ممبر ہیں۔ پارٹی ٹکٹ حصول کے لئے پیسہ والے لوگ پارٹی میں شامل ہوئے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ پیسہ والے لوگوں نے پارٹی کی تنظیم سازی پر بھی قبضہ جمایا ہے۔غلط پالیسیوں کے باعث پارٹی جنبش کھاچکی ہے۔ نظریاتی ورکرز کو دیوار سے لگایا گیا ہے۔خود غرض، لطیفہ گو، خوشامدی ٹولے نے پار ٹی قیادت کو گھیرے رکھا ہے۔

سابق رکن قومی اسمبلی شجاع الملک نے کہا کہ جے یوآئی کی تنظیم سازی اور رکنیت سازی میں خیانت ہوئی ہے۔ محمد خان شیرانی نے بھی خیانت کا کہا ہے۔جے یو آئی کے لوگ سلیکٹیڈ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ن لیگ کے بیانیہ پر محمد خان شیرانی کو تحفظات تھے۔ پی ڈی ایم ،ن لیگ اور اصلاح کی بات کرنے والے کا فارغ کرنا زیادتی ہے۔ پی ڈی ایم میں لوگ نیب کی وجہ سے جمع ہیں۔

Happy
Happy
0 %
Sad
Sad
0 %
Excited
Excited
0 %
Sleepy
Sleepy
0 %
Angry
Angry
0 %
Surprise
Surprise
0 %
0Shares

Average Rating

5 Star
0%
4 Star
0%
3 Star
0%
2 Star
0%
1 Star
0%

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Translate »